سی بی ایس ای کا اسکولوں کو انتباہ ، کتابیں ، یونیفارم اور اسٹیشنری کی فروخت کریں بند

Apr 20, 2017 07:21 PM IST | Updated on: Apr 20, 2017 07:21 PM IST

نئی دہلی : مرکزی ثانوی تعلیم بورڈ (سی بی ایس ای) نے اس سے ملحق اسکولوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ کتابوں، بچوں کی وردی اور اسٹیشنری کی فروخت نہ کریں۔ بورڈ نے آج جاری مشاورت میں کہا ہے کہ اس سے جڑے تعلیمی ادارے کوئی تجارتی ادارے نہیں ہیں۔ بورڈ نے کہا ہے کہ ان کی طرف سے کتابوں، بچوں کی وردی اور اسٹیشنری کی فروخت شرائط کی كھلم-کھلا خلاف ورزی ہے۔ بورڈ نے یہ مشورہ والدین اور دیگر فریقوں سے ملی شکایت پر جاری کیا ہے۔ ان شکایات میں کہا گیا ہے کہ اسکولوں کے احاطے یا دیگر مہیا فروشوں کے ذریعے کتابیں اور بچوں کی وردی کی فروخت کرکے یہ اسکول تجارتی سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔

اسکولوں کو بھیجے گئے خط میں بورڈ نے کہا ہے کہ شکایات کو اس نے سنجیدگی سے لیا ہے اور اسکولوں کو یہ سخت ہدایات ہیں کہ وہ والدین کو کورس کے کتابیں ، نوٹ بک، اسکول یونیفارم، بچوں کے جوتے، بستے وغیرہ اسکول کے احاطے یا منتخب تاجر سے خریدنے کے لئے پابند نہ کریں۔بورڈ نے کہا ہے کہ شرطوں کے مطابق اسکول کمیونٹی سروس ہے اور یہ کاروبار نہیں ہے، اس لئے کسی بھی طور پر اسکول میں تجارتی سرگرمیاں نہیں ہونی چاہیے۔ اسکولوں کا صرف ایک مقصد معیاری تعلیم فراہم كراناا ہونا چاہیے نہ کہ وہ کاروباری سرگرمیوں میں ملوث ہوں۔

سی بی ایس ای کا اسکولوں کو انتباہ ، کتابیں ، یونیفارم اور اسٹیشنری کی فروخت کریں بند

بورڈ نے اسکولوں کو اپنی اس ہدایت کا بھی نوٹس دلایا ہے جس میں صرف قومی تعلیمی تحقیق اور تربیت (این سی ای آرٹی) کی طرف سے شائع کتابوں کو ہی نصاب میں شامل کیا جائے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز