بین الاقوامی سرحد پر پھر گولیوں کی گھن گرج ، 4 شہری زخمی ، 727 سرحدی رہائشی محفوظ مقامات پر منتقل

جموں وکشمیر کے ضلع جموں میں بین الاقوامی سرحد کے ارنیہ، آر ایس پورہ اور رام گڑھ سیکٹروں میں ہندو پاک افواج کے مابین گولہ باری کا تبادلہ جمعہ کو مسلسل دوسرے دن بھی جاری رہا۔

Sep 22, 2017 12:43 PM IST | Updated on: Sep 22, 2017 12:43 PM IST

جموں: جموں وکشمیر کے ضلع جموں میں بین الاقوامی سرحد کے ارنیہ، آر ایس پورہ اور رام گڑھ سیکٹروں میں ہندو پاک افواج کے مابین گولہ باری کا تبادلہ جمعہ کو مسلسل دوسرے دن بھی جاری رہا۔ پاکستانی فائرنگ کے نتیجے میں 4 عام شہری زخمی جبکہ مال مویشیوں کو بڑے پیمانے پر نقصان پہنچا ہے۔ مسلسل گولہ باری کے پیش نظر 727 سرحدی دیہاتیوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا ہے۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ بین الاقوامی سرحد کے ارنیہ، آر ایس پورہ اور رام گڑھ سیکٹروں میں گذشتہ نصف شب کو سرحد پار پاکستانی رینجرز کی جانب سے ایک بار پھر بلااشتعال فائرنگ کی گئی۔ انہوں نے بتایا ’ پاکستانی کی طرف سے شدید فائرنگ کا سلسلہ جمعہ کی صبح تک جاری رہا‘۔ ذرائع نے بتایا کہ بین الاقوامی سرحد پر تعینات فوجی اہلکار سرحد پار سے ہونے والی جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیوں کا موثر جواب دے رہے ہیں۔ جموں وکشمیر پولیس نے اپنے آفیشل ٹویٹر اکاؤنٹ پر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیوں کی تفصیلات ظاہر کرتے ہوئے کہا ’پاکستان کی طرف سے ارنیہ، آر ایس پورہ اور رام گڑھ میں جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی۔

بین الاقوامی سرحد پر پھر گولیوں کی گھن گرج ، 4 شہری زخمی ، 727 سرحدی رہائشی محفوظ مقامات پر منتقل

file photo

پاکستانی فائرنگ کے نتیجے میں 4 عام شہری زخمی، 6 مویشی ہلاک جبکہ 34 دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔ فائرنگ سے 2 رہائشی مکانات کو نقصان پہنچا ہے‘۔ پولیس نے مزید کہا کہ گولہ باری کے پیش نظر 727 سرحدی دیہات کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا ہے۔ جموں وکشمیر میں پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پر گذشتہ ڈیڑھ ماہ سے کشیدگی کا ماحول بنا ہوا ہے۔ ارنیہ سیکٹر میں جمعرات کو پاکستانی فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں 3 عام شہری زخمی، 2 رہائشی مکانوں کو نقصان، 3 مویشی ہلاک جبکہ 6 دیگر زخمی ہوگئے ۔ 20 ستمبر کو شمالی کشمیر کے کیرن سیکٹر میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر سرحد پار سے ہونے والی فائرنگ کے نتیجے میں فوج کا ایک جوان جاں بحق ہوگیا۔ مہلوک فوجی کی شناخت سپاہی راجیش کھٹاری کے بطور کی گئی۔

جموں کے ارنیا سیکٹر میں بین الاقوامی سرحد پر 16 اور 17 ستمبر کی درمیانی رات کو پاکستانی رینجرز کی فائرنگ سے ایک معمر خاتون ہلاک جبکہ پانچ دیگر عام شہری زخمی ہوگئے ۔ مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے 12 ستمبر کو جموں میں پاکستان کو سرحدوں پر جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ بند کرنے کی نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ ’بصورت دیگر سرحدوں پر تعینات ہمارے سیکورٹی فورسز ایسے حالات پیدا کریں گے کہ پاکستان جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ بند کرنے پر مجبور ہوگا‘۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز