پونچھ اور اکھنور میں ایل او سی پر ہند و پاک افواج کے درمیان گولہ باری کا تبادلہ ، فوجی اہلکار زخمی

Nov 17, 2017 03:49 PM IST | Updated on: Nov 17, 2017 03:49 PM IST

جموں: جموں وکشمیر کے ضلع پونچھ میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر ہندوستان اور پاکستان کی افواج کے درمیان گولہ باری کا تبادلہ ہوا ہے۔ تاہم ضلع جموں کے اکھنور سیکٹر میں پاکستانی فائرنگ کے نتیجے میں ایک فوجی اہلکار کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ وزارت دفاع کے ترجمان نے بتایا کہ پاکستانی فوج کی طرف سے جمعہ کی صبح قریب 7 بجکر 45 منٹ پر پونچھ کے ڈگوار میں لائن آف کنٹرول پر شدید فائرنگ اور مارٹر شیلنگ کا آغاز کیا گیا۔

انہوں نے بتایا ’بھارتی فوج سرحد پار سے ہونے والی فائرنگ کا موثر اور منہ توڑ جواب دے رہی ہے‘۔ دفاعی ترجمان نے بتایا کہ ڈگوار میں ہونے والی فائرنگ میں کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ پاکستان کی طرف سے گذشتہ رات جموں کے اکھنور سیکٹر میں ایل او سی پر بھارتی فوج کی چوکیوں پر فائرنگ کی گئی ہے جس کے نتیجے میں ایک فوجی اہلکار زخمی ہوگیا ہے۔

پونچھ اور اکھنور میں ایل او سی پر ہند و پاک افواج کے درمیان گولہ باری کا تبادلہ ، فوجی اہلکار زخمی

file photo

سرکاری ذرائع نے بتایا ’پاکستان نے گذشتہ رات اکھنور سیکٹر کے کھور علاقہ میں بھارتی فوج کی چوکیوں کو نشانہ بنایا۔ سرحد پار سے کی گئی اس فائرنگ سے ہمارا ایک فوجی جوان زخمی ہوا‘۔ تاہم ذرائع کے مطابق زخمی ہونے والے فوجی اہلکار کو معمولی نوعیت کی چوٹیں آئی ہیں۔ اس دوران ضلع انتظامیہ کے احکامات پر پونچھ کے فائرنگ سے متاثرہ علاقہ میں جمعہ کے روز تعلیمی ادارے بند رہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ تعلیمی ادارے بند رکھنے کا اقدام احتیاطی طور پر اٹھایا گیا ہے۔ اس سے قبل پاکستان کی طرف سے 15 نومبر کو پونچھ میں ایل او سی پر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز