وزیر دفاع سیتارمن کے اروناچل پردیش کے دورہ پر چین چراغ پا ، کہی یہ بات

Nov 06, 2017 10:32 PM IST | Updated on: Nov 06, 2017 10:32 PM IST

نئی دہلی: چین نے اپنے اڑیل رویہ کو دہراتے ہوئے وزیر دفاع نرملا سیتارمن کے اروناچل کے دورہ پر ایک بار پھر احتجاج کیا ہے۔ محترمہ سیتارمن نے اتوار کو اروناچل پردیش میں فوج کی سرحدی چوکیوں اور مشرقی آسام میں فضائیہ کے ٹھکانوں کا دورہ کیا تھا۔ چین نے اروناچل پردیش کو متنازعہ علاقہ قرار دیتے ہوئے اس کی مخالفت کی ہے۔

رپورٹوں کے مطابق چین کے وزارت خارجہ کے ترجمان نے اس دورہ پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ مشرقی سیکٹر میں ہند۔چین سرحد پر تنازعہ ہے۔ خیال رہے کہ چین طویل عرصہ سے اروناچل پردیش میں ہندستان کے چوٹی کے لیڈرں کے دوروں کی مخالفت کرتا رہا ہے۔

وزیر دفاع سیتارمن کے اروناچل پردیش کے دورہ پر چین چراغ پا ، کہی یہ بات

محترمہ سیتارمن نے حقیقی کنٹرول لائن پر دفاعی تیاریوں کا جائزہ لیا۔انہوں نے مشرقی اروناچل پردیش میں فوج کی کیبوتی چوکی پر جوانوں کے ساتھ بات چیت کی اور دوردراز کے علاقوں میں مشکل حالات میں ان کی سپردگی اور خدمت کے لئے جوانوں کی تعریف کی۔ ان کے ساتھ مشرقی کمان کے چیف لیفٹننٹ جنرل ابھے کرشنا اور فوج کے سینئر حکام بھی تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز