جموں و کشمیر : سری نگر کے تاریخی گرجا گھر میں 50 برس بعد اس سال کرسمس کے موقع پر بجے گی گھنٹی

جموں وکشمیر کی گرمائی دارالحکومت سری نگر کے مولانا آزاد روڈ پر واقع تاریخی ’ہولی فیملی کیتھولک چرچ‘ میں کرسمس کے مسیحی تہوار کے موقع پر 50 برس بعد گھنٹی بجے گی۔

Dec 24, 2017 05:52 PM IST | Updated on: Dec 24, 2017 05:52 PM IST

سری نگر: جموں وکشمیر کی گرمائی دارالحکومت سری نگر کے مولانا آزاد روڈ پر واقع تاریخی ’ہولی فیملی کیتھولک چرچ‘ میں کرسمس کے مسیحی تہوار کے موقع پر 50 برس بعد گھنٹی بجے گی۔ قابل ذکر ہے کہ رواں برس کے 29 اکتوبر کو مختلف مذاہب (بشمول مسلم، ہندومت، عیسائی اور سکھ) کے پیروکاروں نے اس 121 برس پرانے گرجا گھر( چرچ) میں 105 کلو گرام وزنی نئی گھنٹی نصب کی۔ 50 برس بعد نصب کی گئی اس گھنٹی کو ایک کشمیری عیسائی کنبے نے تحفے کے طور پر پیش کیا تھا۔

اس گرجا گھر میں نصب گھنٹی سنہ 1967 میں تیسری عرب اسرائیل جنگ کے دوران چرچ میں پیش آنے والی آتش زنی کی ایک پراسرار واردات کے طورخراب ہوگئی تھی۔ گرجا گھر کے منتظمین کا کہنا ہے کہ اکتوبر کے اواخر میں جب مختلف مذاہب کے پیروکاروں نے چرچ میں ایک نئی گھنٹی نصب کی تو یہ بات روز روشن کی طرح عیاں ہوگئی کہ وادی کشمیر مذہبی ہم آہنگی کی آماجگاہ ہے۔ چرچ کو کرسمس کے سلسلے میں برقی قمقموں اور لائٹس سے سجایا گیا ہے جبکہ کرسمس کی تقریبات کے لئے استعمال میں ہونے والی چیزیں تیار رکھی گئی ہیں۔

جموں و کشمیر : سری نگر کے تاریخی گرجا گھر میں 50 برس بعد اس سال کرسمس کے موقع پر بجے گی گھنٹی

منتظمین نے بتایا کہ کرسمس کے سلسلے میں خصوصی دعائیہ تقریبات اتوار کی رات دیر گئے شروع ہوکر پیر کو دن بھر جاری رہیں گی۔ اس گرجا گھر کو سنہ 1896 ء میں اس وقت تعمیر کیا گیا تھا جب کشمیر میں ڈوگرہ دور حکومت جبکہ بھارت پر برطانیہ کا راج تھا۔ اس دوران ریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے مسیحی برادری کو کرسمس کی مبارکباد دیتے ہوئے سری نگر کے گرجا گھر میں نئی گھنٹی نصب کرنے کے اقدام کی سراہنا کی ہے۔

انہوں نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک ٹویٹ میں کہا ’کشمیریت کی صحیح روح کو برقرار رکھتے ہوئے مختلف مذاہب کے لوگوں نے ایک ساتھ مل کر سری نگر کے ہولی کیتھولک چرچ کی نئی گھنٹی بجائی۔ کرسمس کے موقع پر امن، محبت اور امید شائد سب سے بڑا تحفہ ہے جو ہم ایک دوسرے کو دے سکتے ہیں۔ آپ سب کو کرسمس کی مبارکباد‘۔ سری نگر میں رہنے والے مسیحی مذہب کے پیروکاروں کی تعداد 200 بتائی جارہی ہے۔

Loading...

سنہ 2011 کی مردم شماری کے مطابق ریاست میں مقیم عیسائیوں کی تعداد صفر اعشاریہ 28 فیصد ہے۔ وادی میں قائم گرجا گھروں کی تعداد 5 ہے جن میں سے تین گرجا گھروں میں معمول کی عبادتیں انجام دی جارہی ہیں۔ سری نگر میں ہولی کیتھولک چرچ کے علاوہ ہائی سیکورٹی زون سونہ وار میں پروٹسٹنٹ چرچ قائم ہے۔ شمالی کشمیر کے بارہمولہ اور شہرہ آفاق سیاحتی مقام گلمرگ میں بھی گرجا گھر قائم ہیں۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز