یوگی راج میں تھانے میں گھس کر بجرنگ دل کارکنوں کا ہنگامہ ، پولیس اہلکاروں کی پٹائی

Apr 23, 2017 01:07 PM IST | Updated on: Apr 23, 2017 01:07 PM IST

آگرہ : اترپردیش میں آگرہ کے فتح پور سیکری علاقہ میں بجرنگ دل کارکنوں نے ایک تھانہ میں گھس کر جم کر ہنگامہ آرائی کی اور پولیس اہلکاروں کے ساتھ مارپیٹ کی ۔ بتایا جاتا ہے کہ بجرنگ دل کارکنوں کے خلاف درج ڈکیتی کے مقدمہ کے خلاف تنظیم کے لیڈروں نے تھانہ کا گھیراؤ کرکے جم کر ہنگامہ کیا۔

اطلاعات کے مطابق ہفتہ دیر شام بجرنگ دل کے کارکنوں نے پولیس تھانے پر پتھراؤ کرکے اچھنیرا کے سی او روی کانت پراشر کے ساتھ مارپیٹ کی۔ ساتھ ہی ساتھ ان لوگوں نے لاک اپ توڑ پانچ ملزموں کو چھڑانے کی بھی کوشش کی۔

یوگی راج میں تھانے میں گھس کر بجرنگ دل کارکنوں کا ہنگامہ ، پولیس اہلکاروں کی پٹائی

علاوہ ازیں سڑک چوکی انچارج کیدار نگر کو گھیر پٹائی کئے جانے کی بھی خبر ہے۔ پستول لوٹنے کے بعد موٹر سائیکل میں آگ لگا دی گئی۔ اس سلسلہ میں بجرنگ دل کے پانچ کارکنوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

غور طلب ہے کہ سیکری میں گزشتہ جمعرات کی رات سبزی بیچنے والے معين اور رضوان پر تیهرا جوتنا کے نزدیک جان لیوا حملہ کیا گیا تھا ۔ پولیس نے ہندتوادی لیڈر ساگر ، مولا، اومی ٹيكري، وكرانت فوجدار، سچن، وشنو، پنٹو اور روی کے خلاف جان لیوا حملہ اور ڈکیتی کا مقدمہ درج کیا تھا۔

مقدمے کی مخالفت میں بجرنگ دل کے لیڈروں نے ہفتہ کو تھانہ کا گھیراؤ کیا۔ ان کا مطالبہ تھا کہ فتح پور سیکری کے انسپکٹر ونود کمار یادو کو معطل کیا جائے۔ موقع پر کشیدگی کو دیکھتے ہوئے کثیر تعداد میں پولیس اہلکاروں کو تعینات کر دیا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز