کشمیر کے بڈگام ضلع میں سلامتی دستوں اور انتہا پسندوں کے درمیان تصادم

سری نگر۔ جموں-کشمیر کے بڈگام ضلع میں آج صبح سویرے سلامتی دستوں اور انتہا پسندوں کے درمیان تصادم شروع ہوگیا۔

Nov 30, 2017 10:22 AM IST | Updated on: Nov 30, 2017 10:22 AM IST

سری نگر۔ جموں-کشمیر کے بڈگام ضلع میں آج صبح سویرے سلامتی دستوں اور انتہا پسندوں کے درمیان تصادم شروع ہوگیا۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ انتہا پسندوں کی موجودگی کی خفیہ اطلاع کی بنیاد پر سلامتی دستوں کے جوانوں اور جموں-کشمیر پولیس کے خصوصی مہم کے دستوں نے بڈگام ضلع میں چرارے شریف کے ایک گاؤں میں مشترکہ تلاشی مہم شروع کی۔

سلامتی دستوں کے جوان جب ایک خاص مقام کی جانب بڑھ رہے تھے، تبھی وہاں پہلے سے چھپے ہوئے انتہا پسندوں نے ان پر خود کار ہتھیاروں سے حملہ کردیا۔ سلامتی دستوں نے بھی انتہا پسندوں کے حملے کا منہ توڑ جوا ب دیتے ہوئے گولی باری کی۔ تصادم اب بھی جاری ہے۔

کشمیر کے بڈگام ضلع میں سلامتی دستوں اور انتہا پسندوں کے درمیان تصادم

فائل فوٹو

ذرائع کے مطابق، مدبھیڑ والے علاقے میں دو سے تین انتہا پسندوں کے چھپے ہونے کا خدشہ ہے۔ اس معاملے میں تفصیلی اطلاعات کا انتظار ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز