ڈوڈہ اور کشتواڑ میں بادل پھٹنے سے بڑے پیمانے پر تباہی، 8 افراد ہلاک

Jul 20, 2017 12:14 PM IST | Updated on: Jul 20, 2017 02:42 PM IST

جموں۔  جموں وکشمیر کے پہاڑی اضلاع ڈوڈہ اور کشتواڑ میں بادل پھٹنے کے واقعات کے نتیجے میں کم از کم آٹھ افراد جاں بحق جبکہ 11 دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔ مہلوکین میں چار خواتین اور 4 کمسن لڑکے لڑکیاں شامل ہیں۔ پولیس نے بتایا ’ضلع ڈوڈہ کے ٹھاٹھری کے مین مارکیٹ میں بال پھٹنے کا واقعہ بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب کو قریب دو بجکر 20 منٹ پر پیش آیا‘۔ ضلع ڈوڈہ سے موصولہ اطلاعات کے مطابق ٹھاٹھری میں بادل پھٹنے کے بعد سیلابی صورتحال پیدا ہوئی اور سیلابی ریلوں نے بڑے پیمانے پر تباہی مچادی۔ انہوں نے بتایا کہ بادل پھٹنے کے اس واقعہ میں کم از کم چھ افراد جاں بحق ہوگئے ہیں جن کی لاشیں برآمد کی جاچکی ہیں۔

انہوں نے بتایا ’تاحال گیارہ افراد کو زخمی حالت میں مکانات کے ملبے سے نکال کر مختلف اسپتالوں میں داخل کرایا گیا۔ علاقہ میں بچاؤ کاروائیاں بدستور جاری ہیں‘۔ پولیس ذرائع نے بتایا ’بادل پھٹنے کے اس واقعہ میں کم از کم چھ افراد ہلاک جبکہ 11 دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔ اس کے نتیجے میں مختلف تعمیری ڈھانچوں بشمول مکانات، اسکولوں اور دکانوں کو شدید نقصان پہنچا ہے‘۔ انہوں نے بتایا ’رہائشی مکانات کے ملبے سے ابھی تک 6 نعشیں نکال لی گئی ہیں‘۔ انہوں نے مہلوکین کی شناخت نیرو دیوی، سریشتہ دیوی ، پٹنا دیوی، 14 سالہ سپنا دیوی دختر دیو راج، 7 سالہ پریا دیوی دختر دیو راج اور 9 سالہ راہل ولد دیو راج کے بطور کی ہے۔ پولیس ذرائع نے بتایا ’بادل پھٹنے کے بعد آنے والے سیلابی ریلوں کے نتیجے میں چھ مکانات، دو دکانیں اور ایک نیشنل اکیڈیمی ہائی اسکول مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہیں‘۔ انہوں نے بتایا ’علاقہ میں بچاؤ کاروائیاں جاری ہیں جبکہ ابھی تک 11 زخمی افراد کو علاج ومعالجہ کے لئے مختلف اسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے‘۔

ڈوڈہ اور کشتواڑ میں بادل پھٹنے سے بڑے پیمانے پر تباہی، 8 افراد ہلاک

ذرائع نے بتایا کہ ہلاکتوں کی تعداد بڑھ سکتی ہے کیونکہ کئی افراد کے رہائشی مکانات کے ملبے تلے موجود ہونے کا خدشہ ہے۔ انہوں نے بتایا ’ٹھاٹھری میں بچاؤ کاروائیاں جنگی بنیادوں پر جاری ہیں۔ پولیس اور فوج کی طرف سے چلائی جارہی بچاؤ کاروائیوں کی نگرانی سینئر سیول و پولیس افسران کررہے ہیں‘۔ذرائع نے بتایا کہ بٹوٹ ۔ڈوڈہ، کشتواڑ قومی شاہراہ کو مختلف مقامات پر بڑے بڑ ے پتھر گرآنے کے بعد گاڑیوں کی آمد ورفت کے لئے بند کردیا گیا ہے۔

دریں اثنا ضلع کشتواڑ کے ڈول میں بھی بادل پھٹنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔ ایس ایس پی کشتواڑ سندیپ وزیر نے یو این آئی کو تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا ’ڈول کے چاچرا چیرجی نامی گاؤں میں بادل پھٹنے کا واقعہ پیش آنے کے سبب 45 سالہ کونگی دیوی اور اس کا پوتا 6 سالہ سمراٹ سیلابی ریلوں میں بہہ گئے‘۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں کی لاشیں برآمد کی جاچکی ہیں۔ ایس ایس پی نے بتایا کہ بادل پھٹنے کے اس واقعہ میں 11 مویشی بشمول گائیں سیلابی ریلوں میں بہہ گئے ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز