دنیا رام کی پیروکار ، مگر ملک میں ایودھیا کا نام لینے والا فرقہ پرست : یوگی

Jun 25, 2017 04:31 PM IST | Updated on: Jun 25, 2017 04:31 PM IST

لکھنؤ: اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے صوبے کو سیاحت کے نقطہ نظر سے کافی خوشحال بتاتے ہوئے آج کہا کہ تھائی لینڈ اور انڈونیشیا جیسے ممالک میں بھی رام نام کی دھوم ہے لیکن یہاں تو ایودھیا کا نام لینے سے ہی شخص کو فرقہ پرست کہا جانے لگتا ہے۔

مسٹر یوگی نے آج یہاں سیاحت کو فروغ دینے کے لئے منعقدہ ایک سیمینار کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ بھگوان رام اور کرشن نے پورے ملک کو ثقافتی نقطہ نظر سے ایک دھاگے میں پیرو دیا ہے ۔ رام نے شمال کو جنوب سے جوڑا تو شری کرشن نے مشرق اور مغرب میں اٹوٹ رشتہ قائم کیا۔ لوگ تاریخ بھول گئے ہیں۔ عالم یہ ہے کہ ایودھیا کا نام لے لینے سے ہی شخص فرقہ پرست کہا جانے لگتا ہے۔

دنیا رام کی پیروکار ، مگر ملک میں ایودھیا کا نام لینے والا فرقہ پرست : یوگی

مسٹر یوگی نے کہا کہ شری رام نے جنگل کے سفر کے ذریعےشمال کو جنوب سے جوڑا۔ وہ چترکوٹ، مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ، تلنگانہ، مہاراشٹر، کرناٹک اور تمل ناڈو ہوتے ہوئے سری لنکا پہنچے تھے۔ اسی طرح شری کرشن کی بیوی ركمنی کو میگھالیہ سے لائے تھے۔ اروناچل پردیش کے لوگ بھی کہتے ہیں کہ ركمنی ان کے یہاں کی تھیں۔ میگھالیہ اور اروناچل ملک کے مشرقی حصے میں واقع ہیں۔ کرشن نے اروناچل سے دواركا پوری تک ملک کو ایک دھاگےمیں باندھ۔ رام اور شری کرشن نے پورے ملک کو ایک دھاگے میں پیرو دیا لیکن سیکولرازم کی پٹی آنکھوں پر باندھنے والوں نے ہندوستان کی یکجہتی اور سالمیت برقرار رکھنے پر سنجیدہ نہیں رہے۔

انہوں نے کہا کہ خوشی کی بات ہے کہ منی پور میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی حکومت ہے۔ ناگالینڈ میں بھی بی جے پی حکومت بنائےگي۔ ملک کو ایک دھاگے میں پیرو کر رکھنے میں بی جے پی ہی قابل ہے۔ بی جے پی پورے ملک کو ایک ساتھ رکھنے کے ساتھ ہی ثقافتی اتحاد بھی قائم رکھے گی جس سے معیشت بھی مضبوط ہوگی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز