مدھیہ پردیش میں ای وی ایم میں گڑبڑی کا معاملہ: کانگریس، عآپ نے الیکشن کمیشن سے کی ملاقات

Apr 01, 2017 07:48 PM IST | Updated on: Apr 01, 2017 07:48 PM IST

نئی دہلی۔  مدھیہ پردیش کے بھنڈ ضلع میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) میں گڑبڑی کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کانگریس مرکزی الیکشن کمیشن پہنچی اور بیلٹ پیپر (کاغذی پرچی) کے ذریعہ ووٹنگ کرانے کی مانگ کی۔ قابل ذکر ہے کہ بھنڈ ضلع کے ایئراسمبلی علاقہ کے ضمنی چناؤ کے لیے ووٹنگ مشین کی آزمائش کے دوران کوئی بھی بٹن دبانے پر بی جے پی کو ہی ووٹ پڑنے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ اس علاقہ میں 9 اپریل کو الیکشن ہونا ہے۔ اس کی شکایت کے لئے کانگریس کے سینئر لیڈر دگ وجے سنگھ کی قیادت میں پارٹی کے ایک وفد نے الیکشن کمشنر سے ملاقات کی۔ ملاقات کے بعد مسٹر سنگھ نے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ الیکشن کمیشن سے معاملہ کی پوری جانچ کرنے اور بیلٹ پیپر کے ذریعہ ووٹنگ کرانے کی مانگ کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے شروع سے ہی ای وی ایم پر بھروسہ نہیں تھا جب ساری دنیا میں پولنگ بیلٹ پیپر سے ہورہی ہے تو ہمیں کیوں اعتراض ہونا چاہیے۔

وہیں،  دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج الیکشن کمیشن سے ملاقات کرکے الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) مشینوں میں مبینہ خرابی کے سلسلے میں اپنے خدشات سے آگاہ کیا اور مستقبل میں ای وی ایم کی جگہ بلیٹ پیپر سے ووٹنگ کرانے کا مطالبہ کیا۔

مدھیہ پردیش میں ای وی ایم میں گڑبڑی کا معاملہ: کانگریس، عآپ نے الیکشن کمیشن سے کی ملاقات

علامتی تصویر

الیکشن کمیشن سے ملنے کے بعد میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر کیجریوال نے ای وی ایم مشينوں میں گڑبڑی کے سلسلے میں اپنے شکوک و شبہات کی حمایت میں مدھیہ پردیش کے بھنڈ میں الیکشن کمیشن کی طرف سے حال میں ان مشینوں کے ٹیسٹ کئے جانے کا حوالہ دیا۔ انہوں نے کہا کہ اس ٹیسٹ کے دوران ای وی ایم سے منسلک وي وي پي اےٹي مشینوں میں سے صرف بھارتیہ جنتا پارٹی کے ہی پرچے آخر کس طرح نکلے۔ انہوں نے کہا کہ خود کمیشن نے اس بارے میں بھنڈ کے ضلع مجسٹریٹ سے رپورٹ مانگی ہے۔ مسٹر کیجریوال نے کہا کہ جب بھنڈ میں ایسا ہو سکتا ہے تو دیگر جگہوں پر ایسا نہیں ہو گا اس کی کیا ضمانت ہے اس لئے وہ کارپوریشن انتخابات میں ای وی ایم مشینوں کے مقام پر بلیٹ پیپر سے ووٹنگ کرانے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

دریں اثنا ایسی خبریں ہیں کہ بھنڈ ضلع کے الیکشن حکام نے کہا ہے کہ وي وي پي اےٹي مشین سے بی جے پی کے نام کے پرچے نکلنے کی جو بات کہی جا رہی ہے اس کے پیچھے کا سچ یہ ہے کہ ایسا مشین کی مشقی جانچ کرنے کے دوران ہوا تھا۔ اس کا ای وی ایم مشین میں خرابی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ مسٹر کیجریوال دہلی میونسپل کارپوریشن کے انتخابات میں ای وی ایم کی جگہ پر بلیٹ پیپر سے ووٹنگ کرانے کی کمیشن سے گزارش پہلے بھی کر چکے ہیں لیکن کمیشن نے اسے قبول نہیں کیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز