آسام میں آر ایس ایس اور وی ایچ پی چلارہی ہیں ہتھیار چلانے کے تربیتی مراکز، اعلی سطحی جانچ کا مطالبہ

Jul 28, 2017 08:44 PM IST | Updated on: Jul 28, 2017 08:45 PM IST

نئی دہلی: آسام ریاستی کانگریس نے آج الزام لگایا کہ راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) اور وشو ہندو پریشد ریاست کے کچھ علاقوں میں ہتھیار چلانے کے تربیت مراکز چلا رہے ہیں۔ ریاستی کانگریس صدر ریپن بورا نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ آر ایس ایس کی اتحادی تنظیم بجرنگ دل اور وشو ہندو پریشد کے لوگ ریاست کے نالباري اور هوجوئي کے دور دراز علاقوں میں نوجوان لڑکوں اور لڑکیوں کو ہتھیار چلانے کی تربیت دے رہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہوجوئی کے گیتا آشرم میں بجرنگ دل نے اپنے کارکنوں کو حال ہی میں چھوٹے اوربڑے مہلک ہتھیار چلانے کی ٹریننگ دی ہے۔ اسی طرح نالباڑی میں بھی وی ایچ کی خواتین ونگ درگا واہینی کو ہتھیاروں کی ٹریننگ دی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بغیر لائسنس کے ہتھیار چلانا جرم ہے تو ان تنظیموں کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کی جاتی ہے۔ اس معاملے کی شکایت کرنے کے لئے انہوں نے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ سے ملنے کا وقت مانگا، لیکن انہیں ملنے کا وقت نہیں دیا گیا۔ معاملے کی تحریری شکایت انہوں نے وزارت داخلہ میں کر دی ہے۔

آسام میں آر ایس ایس اور وی ایچ پی چلارہی ہیں ہتھیار چلانے کے تربیتی مراکز، اعلی سطحی جانچ کا مطالبہ

تربیتی کیمپ چلانے کی وجوہات کے بارے میں پوچھے جانے پر انہوں نے کہا کہ ان تربیت یافتہ لوگوں کے ذریعے بجرنگ دل اور وی ایچ پی کانگریس کے لوگوں پر حملہ کرنا چاہتی ہے۔ مسٹر ریپن بورا نے مبینہ ہتھیاروں کی ٹریننگ کی ایک ویڈیو دکھاتے ہوئے اس کی اعلی سطحی انکوائری کا مطالبہ کیا ، کیونکہ اس سے لوگوں کی سکیورٹی کو سنگین خطرہ در پیش ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہتھیار چلانے کی ٹریننگ کی ویڈیو فوٹیج ملنے کے بعد بھی ریاستی حکومت اور انٹلیجنس ایجنسی اس طرح کی سرگرمیوں کو روکنے میں مکمل ناکام رہی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز