تین سال میں کھل گئی مودی حکومت کی پول: کانگریس پارٹی کا جم کر حملہ

May 16, 2017 05:58 PM IST | Updated on: May 16, 2017 05:58 PM IST

نئی دہلی۔ کانگریس نے مودی حکومت کو ہر محاذ پر ناکام قرار دیتے ہوئے آج کہا کہ تین سال کی حکومت میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی پول کھل گئی ہے۔ پارٹی نے کہا کہ وہ عوام تک اپنی بات پہنچانے کے لئے ملک بھر میں تحریک چھیڑے گي اور اپنی غلطیوں کو سدھارنے اور اقتدار میں واپسی کو یقینی بنائے گی۔ کانگریس کے میڈیا انچارج رندیپ سنگھ سورجےوالا کی قیادت میں پارٹی کے نوجوان لیڈر جیوترادتیہ سندھیا، سچن پائلٹ، آر پی این سنگھ اور سشمتا دیو نے مودی حکومت کی پالیسیوں پر جم کر حملہ کیا اور کہا کہ گزشتہ تین سال کے دوران یہ حکومت کسان، نوجوان، غریب، مزدور وں کے مفادات، خواتین کی حفاظت اور پاکستان پالیسی جیسے حساس معاملے پر مکمل طور پر ناکام رہی ہے اور عوام سے اس نے جو وعدے کئے تھے وہ سب کے سب جھوٹے ثابت ہوئے ہیں۔ پارٹی کے نوجوان لیڈروں نے مودی سرکار کے کام کاج پر اس دوران'تكڑمو کی بھرمار اور لیپا پوتی کی سرکار 'نام سے ایک ویڈیو جاری کرکے جم کر حملہ کیا۔ ویڈیو میں کہا گیا ہے کہ اس دوران ملک میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی، روشن خیالی اور سیکولر نظریہ کی بنیادیں کمزور ہوئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے اقتدار میں آنے سے پہلے عوام سے بڑے بڑے وعدے کئے تھے لیکن گزشتہ 36 ماہ کے دوران اس کے تمام وعدے کھوکھلے ثابت ہوئے ہیں۔ نوٹ بندي، پاکستان کی جانب سے کی جانے والی در اندازی، سوشل سکیورٹی اور منریگا جیسے محاذوں پر حکومت نے ملک کو مایوس کیا ہے۔ کانگریس کے نوجوان لیڈروں نے کہا کہ بی جے پی نے جھوٹ بول کر ملک کے عوام کو دھوکہ دیا ہے۔ لبھاونے نعروں کے ساتھ یہ اقتدار میں آئی تھی لیکن اس کی اصلیت گزشتہ تین سال کے دوران سب کے سامنے آ گئی ہے لہذا کانگریس پورے ملک میں حکومت کی ناكامیوں کو ظاہر کرنے اور کانگریس کی پالیسیوں کو عوام تک پہنچانے کے لیے ملک بھر میں وسیع تر تحریک شروع کرے گی۔ آئندہ اسمبلی انتخابات میں پارٹی کی حکمت عملی کے بارے میں پوچھے جانے پر لوک سبھا میں پارٹی کے چیف وہپ جیوترادتیہ سندھیا نے کہا کہ پارٹی بہتر متبادل نظام اور شفاف حکومت کا ایجنڈا لے کر عوام کے درمیان جائے گی۔ اس دوران بی جے پی حکومت کی خامیوں کو اجاگر کیا جائے گا اور کانگریس اقتدار میں آنے کے بعد کس طرح کامیاب حکومت دے گی، اس کا خاکہ عوام کے سامنے پیش کیا جائے گا۔ انہوں نے بی جے پی کو جشن منانے میں ماہر قرار دیا اور الزام لگایا کہ مدھیہ پردیش میں نرمدا کی صفائی کے معاملے میں امركنٹك میں منعقدہ سوچھ ابھیان کی اختتامی تقریب میں شامل ہونے کے لئے اضلاع میں ایک کروڑ روپے خرچ کر کے لوگوں کو وزیر اعظم کی ریلی تک پہنچایا گیا۔ انہوں نے وياپم گھوٹالہ کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ مدھیہ پردیش حکومت کے خلاف اس سلسلے میں مرکزی حکومت نے کوئی قدم نہیں اٹھایا۔

تین سال میں کھل گئی مودی حکومت کی پول: کانگریس پارٹی کا جم کر حملہ

راجستھان کانگریس کے صدر سچن پائلٹ نے الزام لگایا کہ بی جے پی اور اس کی حکومت نے زمینی حقائق سے منہ موڑ لیا ہے۔ اس کے اصول بھی تبدیل کر دیئے گئے ہیں، اسی لئے جموں و کشمیر میں نائب وزیر اعلی کا عہد ہ حاصل کرنے کے لئے پارٹی نے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے ساتھ ہاتھ ملالیا ۔ سابق مرکزی وزیر آر پی این سنگھ نے کہا کہ دہشت گردوں کو سبق سکھانے کی بات کرنے والی مودی حکومت کے تین سال کی مدت کے دوران ملک میں 12 بڑے دہشت گردانہ حملے ہوئے ہیں اور ان کی تحقیقات کے لئے پاکستانی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے لوگوں کو بلایا جاتا ہے۔ کانگریس حکومت نے پاکستان اور نکسلیوں کے خلاف پالیسیاں بنائی تھیں لیکن ان کو نافذ نہیں کیا جا رہا ہے۔ پارٹی کی نوجوان لیڈر سشمتا دیو نے کہا کہ مودی حکومت کی پالیسیوں سے ملک میں آج نوجوان سب سے زیادہ مایوس ہیں۔ نوجوانوں کے لئے روزگار کے مواقع کم ہو رہے ہیں۔عورتوں کے ساتھ جنسی جرائم کے واقعات 23 فیصد تک بڑھ گئے ہیں اور خواتین کی حفاظت کے نام پر صرف تقریر یں کی جارہی ہیں۔

فلموں سے سیاست میں آنے والی کانگریس سوشل میڈیا سیکشن کی انچارج رميا نے کہا کہ مودی حکومت جنوبی ہندوستان کے ساتھ امتیازی سلوک کی پالیسی اپنا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی لیڈر ترون وجے نے جنوبی ہندوستان کے لوگوں کے بارے میں نسل پرستی پر مبنی بیان دیا ہے۔ کرناٹک حکومت نے مرکز سے خشک سالی کے لئے 47 ہزار کروڑ روپے امداد طلب کی ، لیکن اسے 1786 کروڑ روپے دیے گئے۔آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ نہیں دیا گیا اور کیرالہ حکومت کو منریگا کے لئے 1500 کروڑ روپے دینے سے انکار کر دیا گیا۔ تمل ناڈو کے کسان مجبورہوکر احتجاجی تحریک پر اترآئے ہیں لیکن ان کا کوئی سننے والا نہیں ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز