اتر پردیش میں جرائم کی وارداتیں ہوتی رہی ہیں اور ہمیشہ ہوتی رہیں گی : ڈی جی پی سلکھان سنگھ

Jun 18, 2017 01:10 PM IST | Updated on: Jun 18, 2017 01:11 PM IST

علی گڑھ: اتر پردیش پولیس کے ڈائریکٹر جنرل سلکھان سنگھ نےکل اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئی صاف طور پر کہا کہ اتر پردیش میں جرائم کی وارداتیں ہوتی رہی ہیں اور ہمیشہ ہوتی رہیں گی ان کا خاتمہ نہیں ہو سکتا اور جرائم کی وارداتوں کے خاتمہ کی بات بے بنیاد ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ کہا جا سکتا ہے کہ صوبہ میں نظم و قانون کی صورتحال پہلے سے بہتر ہے۔مسٹر سلکھان سنگھ یہاں گاؤں انڈلاء میں پولیس ٹریننگ اسکول کھولنے کے حکومت کے احکامات کے مد نظر زمینی معائنہ کرنے کی غرض سے آئے ہوئے تھے۔انہوں نے کہا کہ اتر پر دیش میں غنڈے مافیاؤں پر لگام کسنے کا کام پولیس نے کیا ہے،زمینوں کے ناجائز قبضہ کرنے والوں پر بھی پولس نے کاروائی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین میں خوف کے ماحول میں بہت حد تک کمی آئی ہے۔

اتر پردیش میں جرائم کی وارداتیں ہوتی رہی ہیں اور ہمیشہ ہوتی رہیں گی : ڈی جی پی سلکھان سنگھ

انہوں نے مزید بتایا کہ صوبہ میں امن و قانون بہت حد تک بحال ہوا ہے۔ سہارنپور کے حالات پر انہوں نے کہا کہ وہاں کے حالات بھی بہتر بنانے کی کوششیں کی جا رہی ہے۔ انہوں نے اپنے ما تحت افسران کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ وہ بہتر پولسنگ کے لئے لوگوں کے رتبہ اور ان کے وقار کے اعتبار سے پیش آئے۔

ادھر اترپردیش کانگریس کمیٹی کا کہنا ہے کہ اتر پردیش کے پولیس ڈائریکٹر جنرل سلكھان سنگھ کی طرف سے علی گڑھ میں دیا گیا بیان کہ ریاست میں جرائم ہوتے رہے ہیں اور آگے بھی ہوتے رہیں گے ، ریاست کے قانون کی قلعی کھولتا ہے۔ بیان سے اتر پردیش میں قانون کے علاوہ دیگر حالات کا بھی اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔ پردیش کانگریس کمیٹی کے ترجمان ذیشان حیدر نے ڈی جی پی کے بیان کو بدقسمتی قرار دیتے ہوئے کہا کہ آج اتر پردیش میں قانون کا راج ختم ہو گیا ہے اور صوبہ میں جنگل راج قائم ہوگیاہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز