پی او کے کشمیر کا حصہ اورپورا کشمیر ہندوستان کا اہم جزو : غلام نبی آزاد ، بابری مسجد پر کہی یہ بات ؟

فاروق عبداللہ کے بیان کہ ’کشمیر کا جو حصہ پاکستان کے پاس ہے، وہ پاکستان کا ہے‘ کے ردعمل میں کہا ہے کہ پاکستان مقبوضہ کشمیرریاست جموں وکشمیر کا حصہ ہے اور جموں وکشمیر کا پورا خطہ بھارت کا ہے۔

Nov 13, 2017 07:01 PM IST | Updated on: Nov 13, 2017 07:03 PM IST

جموں: کانگریس کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کے بیان کہ ’کشمیر کا جو حصہ پاکستان کے پاس ہے، وہ پاکستان کا ہے‘ کے ردعمل میں کہا ہے کہ پاکستان مقبوضہ کشمیرریاست جموں وکشمیر کا حصہ ہے اور جموں وکشمیر کا پورا خطہ بھارت کا ہے۔انہوں نے پیر کے روز یہاں نامہ نگاروں کی جانب سے نیشنل کانفرنس صدر کے بیان کے بارے میں پوچھے جانے پر کہا ’مجھے کہنے دیجئے۔ ہر ایک سیاسی جماعت کی اپنی سیاسی سوچ ہے۔ جہاں تک میری جماعت اور میرا تعلق ہے تو میں کہنا چاہوں گا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر جموں وکشمیر کا حصہ تھا اور اس کو جموں وکشمیر کا حصہ ہونا چاہیے۔ اور جموں وکشمیر بھارت کا حصہ ہے‘۔

آرٹ آف لیونگ کے بانی شری شری روی شنکر کی بابری مسجدرام مندر تنازعہ کو آپسی گفت وشنید سے حل کرنے کی پہل کے بارے میں پوچھے جانے پر غلام نبی آزاد نے کہا ’میں نہیں جانتا کہ انہیں کس نے مجاز مقرر کیا ہے۔ یہ معاملہ سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے۔ اس کا فیصلہ سپریم کورٹ کرے گا۔ ہر ایک طبقے کو اس کا احترام کرنا ہوگا‘۔

پی او کے کشمیر کا حصہ اورپورا کشمیر ہندوستان کا اہم جزو : غلام نبی آزاد ، بابری مسجد پر کہی یہ بات ؟

انہوں نے سیاسی ورکروں کی ہلاکت پر کہا ’ملک میں سیاسی ورکروں اور عام شہریوں کی ہلاکت قابل مذمت ہے۔ یہ جموں وکشمیر، کیرالہ ، راجستھان اور پورے ملک میں ہورہا ہے۔ یہ بدقسمتی کی بات ہے۔ جنگجوؤں کا سیاسی ورکروں کو نشانہ بنایا ’یا‘ ایک سیاسی جماعت کا دوسری سیاسی جماعت کے ورکروں کو نشانہ بنانا ملک کے لئے صحیح نہیں ہے۔ میں ایسے واقعات کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہوں‘۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز