منموہن پر وزیر اعظم مودی کے بیان سے بھڑکی کانگریس، پارلیمنٹ سیشن کا بائیکاٹ کرے گی!۔

نئی دہلی۔ کانگریس نے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں وزیر اعظم نریندر مودی کے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے۔

Feb 09, 2017 09:19 AM IST | Updated on: Feb 09, 2017 09:19 AM IST

نئی دہلی۔ کانگریس نے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں وزیر اعظم نریندر مودی کے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے۔ بدھ کو وزیر اعظم نریندر مودی نے سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا تھا کہ باتھ روم میں رین کوٹ پہن کر نہانے کا فن صرف انہی کو آتا ہے۔ اس بیان کے بعد کانگریس نے ایوان سے واک آؤٹ کیا اور اب اس نے پی ایم مودی کے بائیکاٹ کا فیصلہ کیا ہے۔ کانگریس نے پی ایم مودی سے ان کے بیان کے لئے معافی کا مطالبہ کیا ہے۔

دراصل، بدھ کو راجیہ سبھا میں وزیر اعظم مودی صدر کے خطاب پر شکریہ تجویز پیش کر رہے تھے۔ اسی دوران اپنی تقریر میں انہوں نے کہا کہ یو پی اے کی حکومت میں بدعنوانی کے کئی معاملے سامنے آنے کے باوجود منموہن سنگھ پر کوئی داغ نہیں لگا۔ اس کے بعد انہوں نے رین کوٹ والا بیان دیا، جس پر کانگریس کے ممبران پارلیمنٹ نے ہنگامہ کھڑا کر دیا۔ ذرائع کے مطابق کانگریس کا یہ بائیکاٹ اس وقت تک جاری رہے گا جب تک وزیر اعظم مودی اپنے بیان کے لئے معافی نہیں مانگتے۔ کانگریس منموہن سنگھ پر پی ایم کے تبصرے سے اس قدر ناراض ہے کہ وہ راجیہ سبھا کی کارروائی سے اس بیان کو ہٹانے کا بھی مطالبہ کر سکتی ہے۔ کانگریس کے اس رخ پر حکومت بھی آر پار کے موڈ میں ہے۔

منموہن پر وزیر اعظم مودی کے بیان سے بھڑکی کانگریس، پارلیمنٹ سیشن کا بائیکاٹ کرے گی!۔

پی ٹی آئی، فائل فوٹو

جمعرات کو بجٹ سیشن کے پہلے مرحلے کا آخری دن ہے، لیکن ایسا لگتا نہیں کہ پارلیمنٹ سیشن ختم ہونے کے بعد بھی یہ جنگ تھمےگی۔ ذرائع کے مطابق کانگریس نے صاف کیا ہے کہ یہ کانگریس اور وزیر اعظم کے درمیان جنگ جیسا ہے، اور آگے بھی ایسا ہی رہے گا جب تک کہ وزیر اعظم معافی نہیں مانگتے۔

اس مسئلے کو لے کر سوشل میڈیا پر بھی جنگ چھڑ گئی۔ راہل گاندھی کے ٹوئٹر ہینڈل پر لکھا گیا کہ وزیر اعظم نے ملک اور پارلیمنٹ کے وقار کو مجروح کیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز