ششی تھرور کے بیان سے کانگریس نے کی کنارہ کشی ، لیڈروں کو احتیاط برتنے کی ہدایت

کانگریس نے اپنے سینئر لیڈر اور رکن پارلیمنٹ ششی تھرور کے ’ہندو پاکستان‘ سے متعلق بیان سے پلا جھاڑتے ہوئے پارٹی لیڈروں کو اپنی بات کہتے وقت احتیاط برتنے اور الفاظ کا محتاط طریقہ سے استعمال کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

Jul 12, 2018 08:59 PM IST | Updated on: Jul 12, 2018 08:59 PM IST

نئی دہلی : کانگریس نے اپنے سینئر لیڈر اور رکن پارلیمنٹ ششی تھرور کے ’ہندو پاکستان‘ سے متعلق بیان سے پلا جھاڑتے ہوئے پارٹی لیڈروں کو اپنی بات کہتے وقت احتیاط برتنے اور الفاظ کا محتاط طریقہ سے استعمال کرنے کا مشورہ دیا ہے۔مسٹر تھرور نے کہا تھا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اگر 2019میں پھر سے اقتدار میں آتی ہے ، تو ہندستان ’ہندو پاکستان‘ بن جائے گا ، کیونکہ وہ نیا آئین لکھے گی جس میں ہندو ملک کی با ت ہوگی اور اقلیتوں کے لئے مساوات کو ختم کردیا جائے گا۔

کانگریس کے ترجمان جے ویر شیرگل نے یہاں اس سلسلہ میں نامہ نگاروں کے سوال پر کہاکہ ملک کی جمہوریت اتنی مضبوط ہے کہ ہندستان کبھی بھی پاکستان جیسا نہیں بن سکتا۔ انہوں نے کہاکہ ہر اہل وطن جانتا ہے کہ ہندستان کی جمہوریت اتنی مضبوط ہے کہ حکومتیں آتی جاتی رہیں، بدلتی رہیں ، ہندستان کی جمہوریت کبھی ہندستان کو پاکستان نہیں بننے دے گی۔ ہندستان ایک کثیرلسانی ملک ہے اور کثیر مذہبی ملک ہے۔ کانگریس پارٹی کا اس میں اہم تعاون ہے۔

ششی تھرور کے بیان سے کانگریس نے کی کنارہ کشی ، لیڈروں کو احتیاط برتنے کی ہدایت

ششی تھرور ۔ فائل فوٹو : پی ٹی آئی ۔

انہوں نے کانگریس کے لیڈروں سے بھی اپنی بات کہتے وقت محتاط رہنے کی گزارش کی اور کہا کہ میں ہر لیڈر سے گزارش کروں گا کہ اپنے الفاظ کا ذرا دھیان سے انتخاب کریں اور احتیاط سے بیان دیں۔ میں کانگریس پارٹی کے ہر لیڈر ، کارکن سے گزارش کروں گا کہ اس بات کا خیال رکھیں کہ کس طرح کے بیان دینے ہیں۔

ادھر بی جے پی نے مسٹر تھرور کے بیان پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس ہندستان اور ملک کے جمہوری نظام کو بدنام کرنے اور ہندوؤں کو دہشت گردی سے جوڑنے کی خوشامد کی سیاست پر واپس آگئی ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز