کانگریس کے ساتھ اکھلیش کا اتحاد تقریباً طے، باضابطہ طور پر اعلان ایک یا دو دن میں

Jan 13, 2017 09:15 AM IST | Updated on: Jan 13, 2017 09:15 AM IST

لکھنئو۔  انتخابی نشان ’سائیکل‘ کیلئے سماجوادی پارٹی کے دونوں خیموں کے مابین جاری گھمسان کے درمیان اکھیلیش یادو خیمہ کا کانگریس اور دیگر اتحادی پارٹیوں کے ساتھ یوپی الیکشن کیلئے گٹھ بندھن کا خاکہ تیار ہوچکا ہے اور اس کا باضابطہ اعلان ایک یا دو روز میں کیا جاسکتا ہے۔ رکن پارلیمنٹ اور وزیر اعلی اکھیلیش یادو کی اہلیہ ڈمپل یادو اور پرینکا گاندھی کے درمیان بات چیت کے بعد آبادی کے اعتبار سے ملک کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش کے اسمبلی انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کے خلاف مہاگٹھ بندھن (گرانڈ الائنس ) کا اب صرف رسمی اعلان کیا جانا باقی رہ گیا ہے۔

کانگریس کے ذرائع کے مطابق مہاگٹھ بندھن کے بارے میں ہر بات پر گفت و شنید ہوچکی ہے۔ کانگریس کے طرف سے اپنے امیدواروں کی پہلی فہرست جاری کئے جانے کے ساتھ ہی کل گٹھ بندھن کے بارے میں اعلان کیا جاسکتا ہے۔ اتحاد کے فارمولہ کے تحت سماجوادی پارٹی گٹھ بندھن کی دوسری اتحادی پارٹیوں کیلئے 112 سیٹیں چھوڑے گی ۔ ان میں سے کانگریس کو 90 سیٹیں ملیں گی جبکہ باقی سیٹیں آر ایل ڈی اور دیگر پارٹیوں کو دی جائیں گی۔ کانگریس کے چند لیڈران اور امیدوار اگرچہ مکر سنکرانتی سے قبل اسمبلی الیکشن کے امیدواروں کی فہرست جاری کئے جانے کے خلاف ہیں لیکن دوسرے لیڈروں کا کہنا ہے کہ وقت بہت کم رہ گیا ہے کیونکہ 17 جنوری سے پہلے مرحلے کے الیکشن کا نوٹیفکیشن جاری ہوجائے گا اس لئے امیدواروں کے اعلان میں تاخیر کرنا مناسب نہیں ہے۔

کانگریس کے ساتھ اکھلیش کا اتحاد تقریباً طے، باضابطہ طور پر اعلان ایک یا دو دن میں

دریں اثناء سماجوادی پارٹی میں جاری گھمسان کے درمیان ملائم سنگھ یادو اور اکھلیش خیمے کے حامیوں کی نگاہیں پارٹی کے انتخابی نشان ’سائیکل‘ پر الیکشن کمیشن کے فیصلے پر ٹکی ہوئی ہیں۔ دوسری جانب پارٹی میں اندرونی چپقلش سے بیزار وزیر اعلی اکھلیش یادو اسمبلی الیکشن کے لئے تشہیری مہم ، انتخابی منشور اور دوسری حکمت عملی تیار کرنے میں مصروف ہوچکے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز