کانگریس کا بی جے پی پر سخت حملہ "جملوں کے بادشاہ کی کسان ریلی ناکام"۔

کانگریس نے وزیراعظم نریندر مودی کو ’جملوں کا بادشاہ‘ قرار دیتے ہوئے بدھ کو الزام لگایا کہ وہ مسلسل چار برس سے ملک کے کسانوں کو گمراہ کررہے ہیں اس لئے پنجاب میں ان کی کسان ریلی پوری طرح ناکام رہی۔

Jul 11, 2018 08:01 PM IST | Updated on: Jul 11, 2018 08:07 PM IST

نئی دہلی:  کانگریس نے وزیراعظم نریندر مودی کو ’جملوں کا بادشاہ‘ قرار دیتے ہوئے بدھ کو الزام لگایا کہ وہ مسلسل چار برس سے ملک کے کسانوں کو گمراہ کررہے ہیں اس لئے پنجاب میں ان کی کسان ریلی پوری طرح ناکام رہی۔

کانگریس کی ترجمان پرینکا چترویدی نے یہاں پارٹی کی باقاعدہ پریس بریفنگ میں کہاکہ ’جملوں کے بادشاہ‘ نریندر مودی جو بولتے ہیں وہ کرتے نہیں ہیں۔ ان کے کرنے اور کہنے میں زمین آسمان کا فرق ہے اور ملک کا کسان اسے سمجھ گیا ہے، اس لئے پنجاب میں مکتسر کے ملوٹ میں بدھ کو منعقدہ ان کی کسان کلیان ریلی میں کسان نہیں آئے اور صرف بھاڑے کی بھیڑ سے ہی وزیراعظم نے خطاب کیا۔

کانگریس کا بی جے پی پر سخت حملہ

کانگریس ترجمان پرینکا چترویدی: فائل فوٹو

انہوں نے کہاکہ نریندر مودی جھوٹ بولتے ہیں اور ان کے جھوٹے جملے ملک ہی نہیں پوری دنیا میں مشہور ہوچکے ہیں۔ سب جانتے ہیں کہ  مودی جو بولتے ہیں اسے نافذ نہیں کرتے ہیں۔ اقتدار میں آنے کے بعد سے ہی وہ کسانوں کو جھانسا دے رہے ہیں اور ملک کے ہر کونے کا کسان ان کی اصلیت کو سمجھ چکا ہے اس لئے اب ان کے جملوں میں آکر گمراہ نہیں ہوتا ہے۔

ترجمان نے نریندر مودی کو ترقی پسند اتحاد  (یوپی اے) کے وقت کی اسکیموں کو ’کاپی پیسٹ‘ کرنے اور ان کی مارکٹنگ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہاکہ جو اسکیمیں کانگریس کی قیادت والی حکومت نے شروع کیں، مودی حکومت انہیں آج اپنا بتا رہی ہے۔

پرینکا چترویدی نے کہاکہ حکومت دعوی کررہی ہے کہ اس نے زمین ہیلتھ کارڈ یوجنا شروع کی ہے جبکہ کانگریس کی قیادت والی یو پی اے حکومت نے اسے 2009میں شروع کردیا تھا اور  2012تک کانگریس حکومت پانچ کروڑ کارڈ دے چکی تھی۔ اسی طرح 1141زمین جانچ مرکز قائم کرنے کا دعوی کیا جارہا ہے جبکہ اصلیت یہ ہے کہ وہ معلومات دینے والے مراکز کو جانچ مرکز بتا رہی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ کانگریس نے ہمیشہ کسانوں کی آواز بن کر کام کیا ہے۔ پارلیمنٹ سے لیکر سڑک تک کانگریس کسانوں کے ساتھ ہے اور پارٹی کے صدر راہل گاندھی مسلسل کسانوں کی لڑائی لڑرہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ مودی حکومت نے کسانوں کو لاگت کی ڈیڑھ گنا کم ازکم سہارا قیمت دینے کا دعوی کیا تھا، لیکن چار برس تک اس سمت میں کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا۔ انہوں نے کہاکہ دھان پر کسانوں کو جو کم از کم سہارا قیمت دی گئی ہے وہ زرعی لاگت اور قیمت کمیشن (سی سی پی) کی 2018-19کی رپورٹ کے حساب سے کسانوں کے دھان کی قیمت میں صرف پندرہ فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز