امریکہ میں بولے راہل۔ ہندوستان کا ماحول خراب، بیف کے لئے ستائے جا رہے مسلمان

Sep 12, 2017 12:05 PM IST | Updated on: Sep 12, 2017 12:05 PM IST

نئی دہلی۔ کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے امریکہ کے برکلے واقع کیلیفورنیا یونیورسٹی میں تقریر کی۔ اپنی تقریر میں راہل گاندھی نے ہندوستان کی تاریخ، تنوع، غربت، عالمی تشدد اور سیاست کے بارے میں بات کی۔ ساتھ ہی نریندر مودی کی حکومت پر جم کر حملے کئے۔ اپنی تقریر میں راہل نے کہا کہ ملک کا ماحول خراب ہے۔ صحافیوں پر تشدد ہو رہا ہے۔ مسلمان بیف کے لئے ستائے جا رہے ہیں۔

عدم تشدد پر بات کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ دنیا میں عدم تشدد کی نظریات خطرے میں ہے۔ لیکن عدم تشدد ہی ایک خیال ہے جو انسانیت کو آگے بڑھا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا، "میں نے اپنے والد اور دادی کو تشدد میں کھویا ہے۔ میں تشدد کو نہیں سمجھوں گا تو کون سمجھے گا؟"

امریکہ میں بولے راہل۔ ہندوستان کا ماحول خراب، بیف کے لئے ستائے جا رہے مسلمان

راہل گاندھی نے کہا کہ جب اندرا گاندھی سے پوچھا گیا کہ ہندوستان لیفٹ کی جانب جھکے گا یا رائٹ کی جانب تو انہوں نے کہا تھا کہ ہندوستان سیدھا کھڑا رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ یو پی اے کی حکومت کے دوسرے مرحلے میں کانگریس بہت زیادہ خوداعتمادی کا شکار ہو گئی تھی۔ پارٹی نے عوام کے ساتھ بات چیت ترک کر دی تھی، اس لئے پارٹی 2014 کے انتخابات میں ہار گئی۔ راہل گاندھی نے کہا کہ جب اندرا گاندھی سے پوچھا گیا کہ ہندوستان لیفٹ کی جانب جھکے گا یا رائٹ کی جانب تو انہوں نے کہا تھا کہ ہندوستان سیدھا کھڑا رہے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز