میرٹھ : کشمیری طلبہ کے خلاف دھمکی آمیز پوسٹر ، 30 اپریل تک ریاست چھوڑ دینے کی دھمکی

Apr 21, 2017 04:23 PM IST | Updated on: Apr 21, 2017 06:32 PM IST

میرٹھ : اترپردیش کے شہر میرٹھ میں اب کشمیریوں کو ریاست چھوڑدینے کی دھمکی دینے والے پوسٹر چسپاں کئے گئے ہیں ۔ یہ پوسٹر نونرمان سینا نامی ایک تنظیم کی طرف سے چسپاں کئے گئے ہیں ۔پوسٹر میں لکھا ہے کہ ہندوستانی فوج پر پتھر پھینکنےو الے کشمیریوں کا بائیکاٹ کیا جائے ، کشمیری اترپردیش چھوڑ دیں ورنہ ...۔ پوسٹر پر تنازع کے بعد پولیس بھی حرکت میں آگئی ہے ۔ پولیس نے تنظیم کے سربراہ امت جانی کے خلاف مذہبی جذبات بھڑکانے کا مقدمہ درج کرلیا ہے اور ساتھ ہی ساتھ پوسٹر کو اتار دیا گیا۔ امت کی گرفتاری کو لے کر پولیس دبش دے رہی ہے۔

دہلی ہائی وے پر سبھارتي یونیورسٹی کے نزدیک جانی رہائشئ امت جانی نے دیوار پر ایک پوسٹر چسپاں کیا ہے۔ پوسٹر پر لکھا ہے کہ ہندوستانی فوج پر پتھر پھینکنے والے کشمیریوں کا بائیکاٹ ، كشميريوں اترپردیش چھوڑدوورنہ ... ۔

میرٹھ : کشمیری طلبہ کے خلاف دھمکی آمیز پوسٹر ، 30 اپریل تک ریاست چھوڑ دینے کی دھمکی

پولیس کپتان کے حکم پر جمعرات کو پرتاپور تھانے میں امت جانی کے خلاف ایس آئی وپن کی جانب سے مقدمہ درج کیا گیا۔ خیال رہے کہ امت جانی پہلے ہی تنازعہ میں ہے ۔لکھنؤ میں مجسمہ توڑنے کے الزام میں بھی امت جیل بھی جا چکا ہے۔ ایس پی سٹی آلوک پریہ درشی کے مطابق امت جانی کی دھر پکڑ بھی کی جائے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز