رامجس کالج تنازعہ: شہید کی بیٹی نے کہا، میں اے بی وی پی سے نہیں ڈرتی

Feb 25, 2017 08:05 PM IST | Updated on: Feb 25, 2017 08:08 PM IST

نئی دہلی۔ دہلی یونیورسٹی کے رامجس کالج میں پرتشدد جھڑپوں کے بعد اے بی وی پی کی ہر جگہ تنقید ہو رہی ہے۔ اسی تناظر میں لیڈی شری رام کالج کی اسٹوڈنٹ گرمیہر کور نے سوشل میڈیا پر ایک مہم شروع کی ہے جس کا نام ہے 'میں اے بی وی پی سے نہیں ڈرتی'۔ سوشل میڈیا میں اس مہم کو کافی سپورٹ کیا جا رہا ہے۔ گرمیہر کی فیس بک پوسٹ کو اب تک ہزاروں لوگ دیکھ چکے ہیں اور اسے کافی شئیر بھی کیا جا رہا ہے۔ گرمیہر کور، کارگل جنگ میں شہید ہوئے کیپٹن منديپ سنگھ کی بیٹی ہیں۔

گرمیہر کور نے اس سوشل میڈیا مہم کا آغاز ایک تختی پر میسیج لکھ کر کیا۔ اس تختی پر انہوں نے لکھا ہے کہ میں دہلی یونیورسٹی میں پڑھتی ہوں۔ میں اے بی وی پی سے نہیں ڈرتی۔ میں اکیلی نہیں ہوں۔ ہندوستان کا ہر طالب علم میرے ساتھ ہے۔ گرمیہر نے اس پیغام کی تصویر، فیس بک پر اپنی پروفائل پکچر کے طور پر لگائی ہے۔

رامجس کالج تنازعہ: شہید کی بیٹی نے کہا، میں اے بی وی پی سے نہیں ڈرتی

جے این یو طالب علم عمر خالد کے ڈی یو میں ہونے والے پروگرام کو منسوخ کئے جانے کو لے کر بدھ کو آئسا اور اے بی وی پی کے طالب علموں کے درمیان جھڑپ ہوئی تھی۔ رامجس کالج میں عمر خالد اور شہلا رشید کو کالج کی لٹریری سوسائٹی نے ایک ٹاک میں حصہ لینے کے لئے بلایا تھا۔ خالد کو 'دی وار ان آدیواسی ایریا' موضوع پر بولنا تھا۔ لیکن، اے بی وی پی کی مخالفت کے چلتے رامجس کالج کو یہ پروگرام منسوخ کرنا پڑا۔

اپنی پروفائل تصویر شیئر کرتے ہوئے گرمیہر نے اسٹیٹس میں لکھا کہ اے بی وی پی کی جانب سے بے قصور اسٹوڈنٹس پر کیا گیا حملہ پریشان کرنے والا ہے اور اسے روکا جانا چاہئے۔ انہوں نے لکھا کہ یہ حملہ مظاہرین پر نہیں تھا بلکہ یہ جمہوریت کے اس خیال پر حملہ تھا، جو ہر ہندوستانی کے دل کے قریب ہے۔ یہ پروفائل تصویر خوف کے خلاف احتجاج کا میرا اپنا طریقہ ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز