Live Results Assembly Elections 2018

یوپی کے نئے ممبران اسمبلی میں سے 80 فیصد کروڑ پتی ، ایک چوتھائی پر سنگین مجرمانہ معاملات

یوپی الیکشن واچ اور ایسوسی ایشن فار ڈیموکریٹک ریفارمس (اے ڈی آر) کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق کامیاب امیدواروں میں 322 (80 فیصد) کروڑ پتی ہیں ، جو 2012 میں 271 یعنی 67 فیصد ممبران اسمبلی کے مقابلہ میں زیادہ ہے

Mar 13, 2017 10:10 AM IST | Updated on: Mar 13, 2017 10:10 AM IST

نئی دہلی : اتر پردیش اسمبلی کے لئے نو منتخب چار نئے اراکین اسمبلی میں سے ایک قتل یا عصمت دری جیسے سنگین فوجداری مقدمات میں ملزم ہے جبکہ 10 میں سے 8 ممبر اسمبلی کروڑ پتی ہیں ۔ یوپی الیکشن واچ اور ایسوسی ایشن فار ڈیموکریٹک ریفارمس (اے ڈی آر) کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق کامیاب امیدواروں میں 322 (80 فیصد) کروڑ پتی ہیں ، جو 2012 میں 271 یعنی 67 فیصد ممبران اسمبلی کے مقابلہ میں زیادہ ہے ۔

یاد رہے کہ 143 (36 فیصد) ممبران اسمبلی نے اپنے خلاف مجرمانہ معاملات کا اعلان کر رکھا ہے ، جو 2012 کے اسمبلی انتخابات کے مقابلے میں کم ہے ۔ 2012 اسمبلی انتخابات میں 189 (47 فیصد) ممبران اسمبلی کے خلاف مجرمانہ معاملات درج تھے ۔ علاوہ ازیں 107 ممبران اسمبلی 26 (فیصد) نے سنگین فوجداری مقدمات کا اعلان کیا ہے اور یہ 2012 میں 98 ممبران اسمبلی (24 فیصد) کے مقابلے میں زیادہ ہے ۔

یوپی کے نئے ممبران اسمبلی میں سے 80 فیصد کروڑ پتی ، ایک چوتھائی پر سنگین مجرمانہ معاملات

Loading...

سنگین فوجداری مقدمات میں ایسے جرائم شامل ہیں ، جن میں زیادہ سے زیادہ پانچ سال یا اس سے زیادہ کی سزا ہو سکتی ہے ، غیر ضمانتی جرائم ہیں ، انتخابات سے متعلق جرائم ہیں ، حملہ ، قتل ، اغوا ، عصمت دری ، کرپشن اور خواتین کے خلاف جرائم سے وابستہ معاملات ہیں ۔

آٹھ ممبران اسمبلی نے قتل سے وابستہ کیسز کا اعلان کیا ہے اور 34 ممبران اسمبلی نے قتل کی کوشش سے متعلق کیسز کی اطلاع دی ہے ۔ ایک رکن اسمبلی نے خواتین کے خلاف جرائم سے وابستہ معاملہ کا انکشاف کر رکھا ہے ۔  رپوٹ میں کہا گیا ہے کہ بی جے پی کے 83 ، سماج وادی پارٹی کے 11 ، بی ایس پی کے چار، کانگریس کا ایک اور تین آزاد امیدوار ممبران اسمبلی نے اپنے حلف نامے میں سنگین مجرمانہ کیسز درج ہونے کا اعلان کیا ہے ۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز