سرحدی کشیدگی کا شاخسانہ ، پونچھ میں ایل او سی کے آرپار تجارت اور بس سروس معطل

Jul 10, 2017 06:38 PM IST | Updated on: Jul 10, 2017 06:38 PM IST

جموں : جموں وکشمیر کے ضلع پونچھ میں لائن آف کنٹرول پر گذشتہ چند دنوں سے جاری کشیدگی کے پیش نظر چکن داباغ کراسنگ پوائنٹ پر ہونے والی دوطرفہ تجارت معطل کردی گئی ہے۔ اس کے علاوہ ہفتہ وار پونچھ راولاکوٹ راہِ ملن بس سروس بھی پیر کو معطل کی گئی۔

پولیس ذرائع نے یو این آئی کو بتایا ’شبانہ فائرنگ کے نتیجے میں ٹریڈ فیسلی ٹیشن سنٹر چکن دا باغ اور کچھ پولیس چوکیوں کو نقصان پہنچا ہے‘۔ انہوں نے بتایا ’دونوں ملکوں کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی کے پیش نظر آج چکن دا باغ پوائنٹ پر کوئی تجارت نہیں ہوئی‘۔

سرحدی کشیدگی کا شاخسانہ ، پونچھ میں ایل او سی کے آرپار تجارت اور بس سروس معطل

file photo

پولیس ذرائع نے مزید بتایا ’اگرچہ پیر کی علی الصبح سے دونوں طرف کی بندوقیں خاموش ہیں، تاہم صورتحال بدستور کشیدہ بنی ہوئی ہے‘۔ دریں اثنا چکن دا باغ کے راستے ہر پیر کو ضلع پونچھ اور پاکستان زیر قبضہ کشمیر کے ضلع راولاکوٹ کے درمیان چلنے والی راہِ ملن بس سروس بھی پیر کو معطل کی گئی۔

ذرائع نے بتایا کہ بس سروس کی معطلی کا فیصلہ سرحدی کشیدگی کے پیش نظر احتیاطی اقدامات کے طور پر لیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ جو مسافر آج اس بس کے ذریعے سفر کرنے والے تھے، کو معطلی کے فیصلے سے آگاہ کیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ 8 جولائی کو ایل او سی پر ہند و پاک افواج کے مابین گولہ باری کے تبادلے میں 7 افراد جاں بحق ہوگئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز