سری نگر میں سی آر پی ایف کے قافلے پر جنگجوؤں کا حملہ، 6 اہلکار اور ایک کمسن لڑکی زخمی

Apr 03, 2017 06:05 PM IST | Updated on: Apr 03, 2017 06:05 PM IST

سری نگر ۔  جموں وکشمیر کے دارالحکومت سری نگر کے مضافاتی علاقہ پانتھہ چوک میں پیر کے روز جنگجوؤں کی جانب سے سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کے قافلے پر گھات لگا کر کئے گئے حملے میں 6 اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔ فائرنگ کے نتیجے میں ایک کمسن لڑکی بھی زخمی ہوئی ہے۔ سی آر پی ایف کے ترجمان نے یو این آئی کو بتایا ’جی ہاں۔ جنگجوؤں کے حملے میں ہمارے چھ اہلکار زخمی ہوگئے ہیں‘۔ انہوں نے بتایا کہ جنگجوؤں نے اُس وقت سی آر پی ایف اہلکاروں پر اندھا دھند فائرنگ کی جب وہ ایک نجی بس سے سفر کررہے تھے۔ سی آر پی ایف ترجمان نے بتایا کہ زخمی سی آر پی ایف اہلکاروں کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا ’حملہ کے فوراً بعد روڑ اوپننگ پارٹی نے پورے علاقے کو محاصرے میں لے لیا۔ جنگجوؤں کو ڈھونڈ نکالنے کے لئے سیکورٹی فورسز کی اضافی نفری بھی طلب کی گئی ہے‘۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ فائرنگ کے نتیجے میں زینب نامی ایک کمسن لڑکی بھی زخمی ہوئی ہے جس کو علاج ومعالجہ کے لئے برزلہ میں واقع ہڈیوں و جوڑوں کے اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ زخمی ہونے والی لڑکی قصبہ پانپور کی رہنے والی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ یہ حملہ وادی میں ہونے والے ضمنی انتخابات کے سلسلے میں جموں سے کشمیر آرہی سی آر پی ایف پر کیا گیا ہے۔

سری نگر میں سی آر پی ایف کے قافلے پر جنگجوؤں کا حملہ، 6 اہلکار اور ایک کمسن لڑکی زخمی

یہ وادی میں گذشتہ تین دنوں کے دوران سیکورٹی فورسز پر ہونے والا تیسرا حملہ ہے۔ سری نگر کے مضافاتی علاقہ میں یکم اپریل کو 4 فوجی اہلکار اُس وقت زخمی ہوگئے جب جنگجوؤں نے پانتھہ چوک بارہمولہ شاہراہ پر فوج کے قافلے پر حملہ کیا تھا۔ پائین شہر کے نوہٹہ میں گذشتہ شام ایک پولیس اہلکار شمیم احمد ساکنہ گریز بانڈی پورہ اُس وقت ہلاک جبکہ 11 دیگر سیکورٹی فورس بشمول سی آر پی ایف کے تین اہلکار زخمی ہوگئے جب جنگجوؤں نے ریاستی پولیس اور سیکورٹی فورسز کی ایک مشترکہ پارٹی پر گرینیڈ حملہ کیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز