دہلی دھماکہ کیس: محمد حسین فاضل اور محمد رفیق شاہ باعزت بری ، طارق ڈار قصوروار قرار ، 10 سال کی سزا

Feb 16, 2017 09:20 AM IST | Updated on: Feb 16, 2017 05:11 PM IST

نئی دہلی: اکتوبر 2005 میں ہوئے دہلی سیریل بم دھماکوں کے کیس میں ملزم محمد رفیق شاہ اور محمد حسین فاضلکو تمام الزامات سے بری کر دیا گیا۔ جبکہ کورٹ نے تیسرے ملزم احمد ڈار کو 10 سال کی سزا سنائی۔ تاہم ڈار پہلے ہی 11 سال کی سزا کاٹ چکے ہیں ، اسلئے عدالت نے اس کی سزا کو پوری تسلیم کر لیا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ 2005 میں دیوالی سے ایک دن پہلے ہوئے ان دھماکوں میں 62 افراد ہلاک اور 210 لوگ شدید طور پر زخمی ہوئے تھے۔

کورٹ نے 2008 میں ملزم ڈار اور دو دیگر ملزمان کے خلاف ملک کے خلاف جنگ چھیڑنے، سازش رچنے، ہتھیار جمع کرنے، قتل اور قتل کی کوشش کے الزام طے کئے تھے۔ دہلی پولیس نے ڈار کے خلاف چارج شیٹ داخل کی تھی۔ اس چارج شیٹ میں اس کال ڈیٹیلس کا ذکر بھی کیا گیا، جس سے مبینہ طور یہ بات سامنے آئی کہ وہ لشکر طیبہ کے اپنے آقاؤں سے کنکشن میں تھا۔ اس معاملے میں پولیس نے اکتوبر 2005 میں دھماکوں کے سلسلے میں تین الگ الگ ایف آئی آر درج کی تھیں۔

دہلی دھماکہ کیس: محمد حسین فاضل اور محمد رفیق شاہ باعزت بری ، طارق ڈار قصوروار قرار ، 10 سال کی سزا

دیوالی کے جشن میں ڈوبی دہلی اچانک ہوئے ان دہشت گردانہ حملوں سے دہل گئی تھی۔ پہلا دھماکہ شام 5: 38 بجے پہاڑ گنج میں ہوا، جس میں 9 افراد کی موت ہوئی اور 60 زخمی ہوئے، دوسرا دھماکہ شام 6:00 بجے گووندپوری میں ہوا، جس میں 4 افراد زخمی ہوئے، جبکہ تیسرا دھماکہ سروجنی نگر میں شام 6: 05 بجے ہوا جس میں سب سے زیادہ 50 لوگوں کی موت ہوئی اور 127 افراد زخمی ہوئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز