ارون جیٹلی کے ہتک عزت کے مقدمہ میں جواب داخل کرنے میں تاخیر کرنے پر کیجریوال پر 5000 کا جرمانہ

ڈی ڈی سی اے سےمتعلق معاملہ میں مسٹر کیجریوال کے مالی بے ضابطگیوں کے الزامات پر مسٹر ارون جیٹلی نے ان کے خلاف 10 کروڑ روپے کے ہتک عزت کا مقدمہ دائر کیا تھا۔

Sep 04, 2017 04:31 PM IST | Updated on: Sep 04, 2017 04:31 PM IST

نئی دہلی: دہلی ہائی کورٹ نے آج دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال پر وزیر خزانہ ارون جیٹلی ہتک عزت کے معاملے میں اپنا جواب دینے میں تاخیر کرنے کے لئے پانچ ہزار کا جرمانہ عائد کیا۔ دہلی اینڈ ڈسٹرکٹ کرکٹ ایسو سی ایشن(ڈی ڈی سی اے ) سےمتعلق معاملہ میں مسٹر کیجریوال کے مالی بے ضابطگیوں کے الزامات پر مسٹر ارون جیٹلی نے ان کے خلاف 10 کروڑ روپے کے ہتک عزت کا مقدمہ دائر کیا تھا۔ اس مقدمے کی سماعت کے دوران مسٹر کیجریوال کی جانب سے سینئر وکیل رام جیٹھ ملانی نے مسٹر جیٹلی کے خلاف ناشائستہ لفظ کا استعمال کیا تھا ۔مسٹر رام جیٹھ ملانی نے عدالت میں کہا تھا کہ یہ الفاظ ان کے مؤکل وزیر اعلی کے کہنے پر استعمال کیے گئے ہیں۔

اس کے بعد مسٹر جیٹلی نے کجریوال کے خلاف 10 کروڑ روپے کا ایک اور ہتک عزت کا کیس درج کرایا تھا۔ اس معاملے میں ہائی کورٹ نے جواب دینے میں تاخیر کی وجہ سے مسٹر کیجریوال پر 5 ہزار روپے کا جرمانہ لگایا۔ عدالت نے پہلے 25 اگست کو اس کیس کی ابتدائی سماعت کے حکم کے خلاف وزیر اعلی کی درخواست کو خارج کردیا تھا۔

ارون جیٹلی کے ہتک عزت کے مقدمہ میں جواب داخل کرنے میں تاخیر کرنے پر کیجریوال پر 5000 کا جرمانہ

اس الیکشن میں آپ کے رام چندر کو 59886 ووٹ ملے۔

ڈی ڈی سی اے میں مالی بے ضابطگیوں کے معاملے میں جیٹلی نے کیجریوال کے علاوہ ان کی پارٹی کے دیگر لیڈروں راگھو چڈھا، دیپک باجپئی، کمار وشواس، آسوتوش اور سنجے سنگھ پر بھی مقدمہ دائر کیا۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز