خود کو کرشن کا اوتار بتا کر لڑکیوں کا جنسی استحصال کرتا تھا بابا ، ہائی کورٹ نے مانگی آشرموں کی تفصیلات

Dec 22, 2017 02:22 PM IST | Updated on: Dec 22, 2017 02:22 PM IST

نئی دہلی : دہلی میں ایک اور فرضی بابا کا پردہ فاش ہوا ہے ۔ روہنی علاقہ میں واقع ادھیاتمک وشوودھیالیہ سے پولیس نے بدھ کو چھاپہ مار کر 41 لڑکیوں کو آزاد کرایا ۔ اس آشرم میںکئی سالوں سے لڑکیوں اور بچیوں کا جنسی استحصال ہو رہا تھا۔ ادھیاتمک وشوودیالیہ کے بابا وریندر دیکشت کے بار ے میں کئی حیران کن باتیں سامنے آئی ہیں۔

بتایا جارہا ہے کہ دیگر باباوں کی طرح اس بابا نے بھی خود کو بھگوان قرار دے رکھا تھا ۔ وہ خود کو کرشن کا اوتار بتاتا تھا اور آشرم کی لڑکیوں کو اپنی رانیاں تسلیم کرتا تھا۔ الزامات کے مطابق مذہب کو چولا پہن کر بابا تقریبا ہردن 10 لڑکیوں کی آبروریزی کرتا تھا۔

خود کو کرشن کا اوتار بتا کر لڑکیوں کا جنسی استحصال کرتا تھا بابا ، ہائی کورٹ نے مانگی آشرموں کی تفصیلات

عمر کے اعتبار سے لڑکیوں کو دے رکھا تھا فلور

ادھیاتمک وشوودیالیہ کا بابا وریندر دیو دیکشت بڑی شان و شوکت کے ساتھ رہتا تھا۔ اس نے ہر کام کیلئے الگ الگ لڑکیاں مختص کر رکھی تھی۔ اس کے آشرم میں ہر عمر کی لڑکیوں کیلئے الگ الگ فلور تھا ۔ 28 سال سے کم عمر کی لرکیوں کے اتھ یہ بات تھرڈ فلو پر رہتا تھا ۔ اس سے زیادہ عمر والی لڑکیوں اور خواتین کو چوتھی منزل پر جگہ دی گئی تھی۔

سرنگ کے راستے لائی جاتی تھی لڑکیاں

اس بابا کے بارے میں بتایا جارہا ہے کہ آشرم میں لڑکیوں کو یرغمال بناکر رکھنے کیلئے انہیں ڈرگس کا اوور ڈوز بھی دیا جاتا تھا ۔ یہی نہیں وشوودیالیہ میں ایک مین اور دوسرا وی وی آئی پی آشرم ہے ۔ دونوں آشرموں کو ایک سرنگ کے ذریعہ جوڑا گیا تھا ، جس کے ذریعہ ہی لڑکیوں کو لانے کا کیا جاتا تھا ۔

سی بی آئی بابا کا سراغ لگانے میں مصروف

اس معاملہ میں اب بابا دیویندر دیو دیکشت کو چار جنوری کو ہائی کورٹ میں پیش ہونا ہے ۔ معاملہ کی جانچ کررہی سی بی آئی اس کا سراغ لگانے میں مصروف ہوگئی ہے ۔ ادھر ادھیاتمک آشرموں میں خواتین کی صورتحال جاننے کیئے بھی کورٹ نے دو وکیلوں کو ہدایت دی ہے۔

ہائی کورٹ نے سبھی آشرموں کی فہرست طلب کی

دہلی ہائی کورٹ نے پولیس کو فرضی بابا وریندر دیو دیکشت کے سبھی آٹھ آشرموں کی فہرست پیش کرنے کی ہدایت دی ہے۔ اگر آشرم کی تفصیلاب کورٹ میں پیش نہیں کی جاتی ہے تو کورٹ وریندر دیو دیکشت کے خلاف وارنٹ بھی جاری کرسکتا ہے ۔ فی الحال اس معاملہ میں دو لوگوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔

ملزم بابا کی جلد گرفتاری کا مطالبہ

ادھر اس معاملہ میں دہلی خواتین کمیشن کی صدر سواتی مالیوال نے ملزم بابا کی جلد گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔ سواتی مالیوال کا کہنا ہے کہ ادھیاتمک وشوودیالیوں میں سیکس ریکٹ چل رہا ہے ۔ بابا کو جلد سے جلد گرفتار کیا جانا چاہئے ۔ ہم چاہتے ہیں کہ اس کی سچائی سب کے سامنے جتنا جلد ہو آجائے۔

راجستھان کی خاتون نے ہائی کورٹ میں داخل کی تھی عرضی

اس آشرم میں رہ چکی راجستھان کی ایک خاتون نے بابا کے خلاف ہائی کورٹ میں عرضی داخل کی تھی۔ خاتون کا الزام ہے کہ آشرم میں لڑکیوں کو پنجرے میں بند کرکے رکھا جاتا تھا۔ یہاں غیر ملکی لڑکیاں بھی لائی جاتی تھیں ۔ رات میں سرنگ کے ذریعہ لڑکیوں کی سپلائی بھی ہوتی تھی۔ ہائی کورٹ نے خاتون کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے پولیس کا آشرم میں چھاپہ ماری کا حکم دیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز