نوٹ بندی معاملہ: ہند نژاد غیر ملکی پرانے نوٹ بھنانے کیلئے در در بھٹکنے پر مجبور

Jan 10, 2017 04:57 PM IST | Updated on: Jan 10, 2017 04:57 PM IST

نئی دہلی۔  حکومت ایک طرف جہاں غیر مقیم ہندستانیوں کے ذریعہ ہند نژاد غیر ملکیوں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کی کوشش کر رہی ہے، وہیں دوسری طرف 500 اور ایک ہزار روپے کے منسوخ نوٹ تبدیل کرنے کے لئے ہند نژادوں کو در در بھٹکنا پڑ رہا ہے۔ نوٹوں کی منسوخی کے پیش نظر حکومت نے غیر مقیم  ہندستانیوں کو پرانے نوٹ تبدیل کرنے کے لئے 30 جون 2017 تک وقت دیتے ہوئے کہا تھا کہ ایسے ہندستانی ملک میں آنے پر ہوائی اڈے پر کسٹم حکام کے پاس دستیاب خصوصی فارم میں قابل تبدیل پرانے نوٹوں کا ذکر کریں گے اور اسی فارم کو ہندوستانی ریزرو بینک میں جمع کر کے 25 ہزار روپے تک کے پرانے نوٹ بدلے جاسکیں گے،تاہم، اس سلسلے میں جاری نوٹیفکیشن اچھی طرح واضح نہیں ۔ بنگلورو میں غیر اقامتی ہندستانی کانفرنس میں بھی یہ مسئلہ اٹھا جس پرمرکزی وزیر جنرل وی کے سنگھ نے کہا کہ وہ اس معاملے کو وزارت خزانہ کے سامنے رکھیں گے۔

ہند نژاد برطانوی شہری ڈاکٹر سنیل اپادھیائے اور سویتا اپادھیائے جب 25-25 ہزار روپے کے پرانے نوٹ تبدیل کرنے کے لئے دہلی میں ریزرو بینک میں پہنچے تو ان سے کہا گیا کہ ان کے نوٹ نہیں بدلے جائیں گے۔ صرف غیر مقیم ہندستانیوں کے ہی پرانے نوٹ بدلے جائیں گے۔ اس سلسلے میں ریزرو بینک سے رابطہ کرنے پر حکام نے اس سلسلے میں حکومت کی طرف سے جاری نوٹیفکیشن کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ انہیں صرف تارکین وطن (این آر آئی) کے ہی پرانے نوٹ تبدیل کرنے کے لئے کہا گیا ہے۔ کسی دوسرے ملک کی شہریت والے ہند نژادوں کے نوٹ نہیں بدلے جائیں گے۔

نوٹ بندی معاملہ: ہند نژاد غیر ملکی پرانے نوٹ بھنانے کیلئے در در بھٹکنے پر مجبور

فائل فوٹو: رائٹرز

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز