دیال سنگھ کالج تبدیلی نام تنازع : دہلی سکھ گرودوارہ پربندھک کا فیصلہ واپس نہ لینے پر احتجاج کی دھمکی

Nov 26, 2017 12:27 PM IST | Updated on: Nov 26, 2017 12:28 PM IST

نئی دہلی: دہلی سکھ گرودوارہ پربندھک کمیٹی (ڈی ایس جی ایم سی ) نے دیال سنگھ کالج کا نام تبدیل کرنے کے فیصلہ کو واپس نہیں لینے پر احتجاج کی دھمکی دی ہے۔دیال سنگھ کالج منیجنگ کمیٹی کے سربراہ امیتابھ سنہا کی قیادت والی کمیٹی نے ایوننگ کالج کا نام بدل کر’ وندےماترم کالج‘ رکھنے کے فیصلہ کے بعد سے تنازعہ پیدا ہو گیا ہے۔

ڈی ایس جی ایم سی کے جنرل سکریٹری من جندر سنگھ سرسا نے سکھ برادری اور دنیا بھر میں رہنے والے کالج کے سابق طالب علموں سے اپیل کرتے ہوئے کہا ہے یہ صرف نام کی تبدیلی کا معاملہ نہیں ہے بلکہ سماجی کارکن دیال سنگھ مجیٹھیا کی وراثت کوختم کرنے کی کوشش ہے جنہوں نے اپنی پوری زندگی ملک کی تعمیر اور لوگوں کو بھلائی میں لگا دی تھی۔مسٹر سرسا نے کہا اس معاملہ میں ہم خیال دانشوروں کی کل ایک میٹنگ بلائی گئی ہے اور آگے کی کارروائی کا لائحہ عمل تیار کیا جائے گا۔

دیال سنگھ کالج تبدیلی نام تنازع : دہلی سکھ گرودوارہ پربندھک کا فیصلہ واپس نہ لینے پر احتجاج کی دھمکی

دیال سنگھ کالج: فائل فوٹو

کالج کا نام دیال سنگھ مجیٹھیا کے نام پر ہے. انہوں نے ’پنجاب نیشنل بینک‘ اور ’ٹربیون‘ اخبار کی بنیاد رکھی تھی۔ انہوں نے ملک کی تعمیر اور معاشرے میں بیش قیمتی رول ادا کیا ہے. ذات مذہب سے بالاتر ہوکر انہوں نے ہر طبقے کے لوگوں کی بھلائی کے لئے کام کیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز