الیکشن کمیشن کا اروند کیجریوال کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا حکم

Jan 29, 2017 05:38 PM IST | Updated on: Jan 29, 2017 05:38 PM IST

نئی دہلی۔ الیکشن کمیشن نے نوٹ کے عوض ووٹ کے مبینہ بیان پر دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال کے خلاف مناسب قانونی کارروائی کے تحت ایف آئی آر درج کرنے کا آج حکم دیا۔

کمیشن کا یہ حکم  کیجریوال کے آٹھ جنوری کو گوا میں ایک انتخابی ریلی میں دیے گئے اس بیان کو انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی سمجھتے ہوئے ایف آئی آر درج کرنے کے لئے دیا گیا ہے جس میں انہوں نے لوگوں سے کہا تھا کہ اگر دوسری سیاسی پارٹی رشوت دینے آئیں تو وہ لے لیں لیکن ووٹ عام آدمی پارٹی کو ہی دیں۔ کمیشن نے  کیجریوال کے اس بیان پر سخت اعتراض کرتے ہوئے ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کے ساتھ ہی اس حکم پر عمل درآمد کی رپورٹ 31 جنوری کو شام تین بجے تک اس کے سامنے پیش کرنے کا بھی حکم دیا۔

الیکشن کمیشن کا اروند کیجریوال کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا حکم

گیٹی امیجیز

گزشتہ ہفتے الیکشن کمیشن نے  کیجریوال کو ان کے تبصرے کے لئے سخت سرزنش کرتے ہوئے پارٹی کی منظوری منسوخ کرنے کی دھمکی دی تھی۔ کمیشن نے کیجریوال سے کہا تھا کہ آگے سے وہ انتخابات کے دوران اپنی تقریروں میں تحمل برتیں گے۔ دوسری صورت میں انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی صورت میں ان کی پارٹی کی منظوری منسوخ کی جا سکتی ہے۔ کمیشن کی جانب سے 16 جنوری کو کیجریوال کو اس معاملے میں وجہ بتاؤ نوٹس بھی جاری کیا گیا تھا۔ کمیشن کے اس قدم کو کیجریوال نے 'غیر قانونی، غیر آئینی اور غلط' قرار دیتے ہوئے اسے عدالت میں چیلنج کرنے کی بات کہی تھی۔ اگرچہ عام آدمی پارٹی کمیشن کے فیصلے کے خلاف عدالت نہیں گئی۔

خبروں کے مطابق کیجریوال نے مبینہ طورپر گوا کے بینولم اسمبلی حلقہ کی انتخابی ریلی میں لوگوں سے یہاں تک کہا تھا کہ اگر کوئی پارٹی انہیں ووٹ کے عوض پانچ ہزار روپے کی رشوت دینے کی پیشکش کرتی ہے تو وہ اس سے 10 ہزار روپے مانگیں اور یہ رشوت بھی صرف نئے نوٹوں میں ہی لیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز