گئو رکشکوں کی دہشت کا اثر: میرٹھ میں بکروں کی قیمتوں میں غیرمعمولی اضافہ

Aug 29, 2017 07:48 PM IST | Updated on: Aug 29, 2017 07:48 PM IST

میرٹھ  ۔ گئو رکشا کے نام پر تشدد کے واقعات سے جہاں  خوفزدہ جانور کے  تاجروں کی تجارت متاثر ہوئی ہے وہیں اسکا اثر اب قربانی کے جانوروں کی خرید و فروخت پر بھی نظر آ رہا ہے ۔ مغربی اترپردیش میں  قربانی کے جانوروں کا سب سے بڑا بازار کہلانے والے میرٹھ میں بھی ان دنوں سپلائی میں کمی اور مانگ میں اضافے سے قربانی کے جانوروں کی قیمتوں میں غیرمعمولی اضافہ  ہوا ہے جس کا سیدھا اثر تاجروں کے علاوہ خریداروں کی جیب پر بھی پڑ رہا ہے ۔

تاجروں میں دہشت سے جانوروں کی تجارت کا اثر قربانی کے جانوروں کے بازاروں پر پڑا ہے ۔ ایسے میں قربانی کے بڑے جانور جہاں بازار میں نظر نہیں آ رہے ہیں وہیں چھوٹے جانوروں کی مانگ میں اضافے سے  قیمتوں میں  غیر معمولی تیزی کا رخ نظر آ رہا ہے ۔ عید الاضحیٰ سے قبل شہروں اورقصبوں میں قربانی کے جانوروں کی خرید و فروخت کے لئے بازار سج جاتے ہیں ۔ اس  تہوار کے موقع پر جہاں تاجر کچھ  منافع کمانے کی غرض سے دوردراز کے علاقوں سے سفر کرکے قربانی کے جانور فروخت کرنے بازاروں میں پہنچتے ہیں، وہیں قربانی کے مقصد کو پورا کرنے کے لئے خریدار کو بھی  اپنی حیثیت اور پسند کے مطابق جانور دستیاب ہو جاتے ہیں ۔ لیکن گزشتہ کچھ وقت میں جانور تاجروں کو تشدد کا نشانہ بناۓ جانے کے واقعات کے بعد سے یہ تجارت متاثر ہوئی ہے اور اب اسکا اثر قربانی کے جانوروں کی خرید و فروخت پر بھی نظر آ رہا ہے

گئو رکشکوں کی دہشت کا اثر: میرٹھ میں بکروں کی قیمتوں میں غیرمعمولی اضافہ

تاجروں کے مطابق جی ایس ٹی کے لاگو ہونے کے بعد سے کاروبار پہلے ہی کافی متاثر ہوا ہے جس کا اثر بازار پر پڑا ہے ۔ تاہم جانور تاجروں کو نشانہ بناۓ جانے کے بعد دیگر ریاستوں سے ہونے والی  جانوروں کی تجارت متاثر ہوئی ہے ۔ اس وقت بازار میں سپلائی کم اور مانگ میں اضافہ ہونے سے خاص طور پر قربانی کے چھوٹے جانوروں کی قیمتوں میں اضافہ ہونا لازمی ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز