کے جی ایم یو لکھنو میں آتشزدگی کے بعد افراتفری ، 8 مریضوں کی موت، یوگی پہنچے ٹراما سینٹر، معاوضہ کا اعلان

Jul 16, 2017 01:31 PM IST | Updated on: Jul 16, 2017 01:36 PM IST

لکھنو : لکھنؤ کے کنگ جارج میڈیکل یونیورسٹی (کے جی ایم یو ) کے ٹراما سینٹر میں ہفتہ دیر شام بھیانک آگ لگ گئی۔ آگ کی وجہ سے افراتفری کے ماحول میں بروقت علاج نہ مل پانے کی وجہ سے 8 مریضوں کی موت کی بات سامنے آئی ہے۔ تاہم مریضوں کی موت کی سرکاری طور پر ابھی تک تصدیق نہیں کی گئی ہے۔وزیر اعلی یوگی نے آگ لگنے کے واقعہ کا فوری نوٹس لیتے ہوئے کمشنر کو جانچ کر کے تین دن میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایات دی ہیں۔

وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ اتوار کو ٹراما سینٹر پہنچے، جہاں انہوں نے بھرتی مریضوں سے ملاقات کر کے کیفیت معلوم کی ۔ وہیں آگ کس طرح لگی ، اس کی جانکاری بھی وزیر اعلی یوگی نے کے جی ایم یو اور پولیس انتظامیہ سے بات چیت کر کے حاصل کی ۔ موقع پر ڈی جی پی سلكھان سنگھ سمیت کئی سینئرافسران موجود تھے ۔ ادھر وزیر اعلی کی طرف سے حادثہ میں ہلاک ہونے والوں کے کنبہ کیلئے دو دو لاکھ روپے کے معاوضہ کا اعلان کیا گیا۔

کے جی ایم یو لکھنو میں آتشزدگی کے بعد افراتفری ، 8 مریضوں کی موت، یوگی پہنچے ٹراما سینٹر، معاوضہ کا اعلان

ادھر کے جی ایم یو کے سی ایم ایس ایس این شنكھوار کا کہنا ہے کہ علاج نہ ہونے کی وجہ سے کسی بھی مریض کی موت نہیں ہوئی ہے۔ علاج کے دوران مریض کی موت ایک عام بات ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ٹراما سینٹر میں مریض انتہائی سنگین حالات میں آتے ہیں۔

آگ کی اطلاع ملتے ہی مریضوں کو اسپتال سے باہر نکالا گیا۔ تقریبا 150 مریضوں کو 8 مختلف سرکاری اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ ٹراما سینٹر میں تقریبا 300 مریض داخل تھے، جس سے میں 37 وینٹی لیٹر پر تھے۔ 100 سے زیادہ مریض کو شتابدی میڈیکل کالج میں داخل کرایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ گاندھی وارڈ سمیت کئی پرائیویٹ یونٹ میں بھی مریضوں کو منتقل کردیا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز