بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن پارلیمنٹ ساکشی مہاراج کو الیکشن کمیشن نے جاری کیا نوٹس

Jan 10, 2017 12:25 PM IST | Updated on: Jan 10, 2017 12:25 PM IST

نئی دہلی۔ الیکشن کمیشن نے اترپردیش کے اناو سے بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جےپی) کے رکن پارلیمنٹ ساکشی مہاراج کے متنازعہ بیان کوانتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے آج ایک نوٹس جاری کیا۔ الیکشن کمیشن کے ذرائع نے بتایا کہ کمیشن کا بادی النظر میں یہ خیال ہےکہ  مہاراج کا یہ بیان انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہے اور انہیں کل 11بجے تک اپنا جواب دینے کو کہا گیا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ رکن پارلیمنٹ ساکشی مہاراج نے جمعہ کو میرٹھ میں کہا تھا کہ ملک کی آبادی بڑھتی جارہی ہے اور اس کی وجہ سے ملک میں متعدد مسائل پیدا ہوگئے ہیں۔آبادی میں اضافے کےلئے ہندو مذہب کےلوگ ذمہ دار نہیں ہیں اور سب کے لئے یکساں قانون بنانے کا وقت آگیا ہے۔

انہوں نے کہا تھا ’’آبادی میں اضافہ کرنے کے ذمہ دار وہ لوگ ہیں جو چار چار بیویاں،چالیس بچوں کی بات کرتے ہیں۔ لیکن ہم کہتے ہیں کہ اب یہ نہیں چلے گا،بالکل نہیں چلے گا۔‘‘انہوں نے ہندو خواتین سے چار چار بچے پیدا کرنے کی بات کہی تھی۔ اسی دوران میرٹھ پولیس نے اس معاملے میں بی جے پی رکن ساکشی مہاراج کے خلاف از خود نوٹس لے کر ایف آئی آر درج کرلی ہے اور ان پر دفعہ 295اے ،298،188تعزیرات ہند اور عوامی نمائندے قانون کی دفعہ 171کے تحت معاملہ درج کیا گیا ہے۔

بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن پارلیمنٹ ساکشی مہاراج کو الیکشن کمیشن نے جاری کیا نوٹس

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز