الیکشن کمیشن نے کیا 16 لاکھ 15 ہزار وی وی پی اے ٹی مشینیں خریدنے کا عمل شروع

Apr 23, 2017 03:41 PM IST | Updated on: Apr 23, 2017 03:41 PM IST

نئی دہلی: الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) میں مبینہ گڑبڑی کے سوالات کے دوران الیکشن کمیشن نے ای وی ایم میں لگانے کیلئے ووٹنگ کے بعد پرچی دینے والی 16 لاکھ 15 ہزار ووٹر ویریفائبل پیپر آڈٹ ٹرائل (وی وی پی اے ٹی) مشینیں خریدنے کا عمل شروع کردیا ہے۔

کمیشن نے الیکٹرانکس کارپوریشن آف انڈیا لمیٹیڈ (ای سی آئی ایل) اور بھارت الیکٹرانکس لمیٹیڈ (بی ای ایل) کو الگ الگ تجاویز بھیجی ہیں اور ہر ایک کو آٹھ لاکھ ساڑھے سات ہزار وی وی پی اے ٹی مشینوں کی فراہمی حاصل کرنے کا ارادہ ظاہر کیا ہے۔ اس خریداری کی لاگت تقریباً 3173.47 کروڑ روپئے ہوگی۔ کمیشن نے کہا ہے کہ یہ مشینیں اسے ستمبر 2018 تک دستیاب ہوجانی چاہئے تاکہ 2019 کے عام انتخابات کے پہلے یہ مشینیں ای وی ایم میں لگائی جاسکیں۔ ستمبر 2018 تک دستیاب ہوجانی چاہئے تاکہ 2019 کے عام انتخابات کے پہلے یہ مشینیں ای وی ایم میں لگائی جاسکیں۔

الیکشن کمیشن نے کیا 16 لاکھ 15 ہزار وی وی پی اے ٹی مشینیں خریدنے کا عمل شروع

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز