سری نگر کے دہلی پبلک اسکول میں محصور دونوں جنگجو ہلاک، ایک افسر سمیت تین فوجی اہلکار زخمی

Jun 25, 2017 09:21 PM IST | Updated on: Jun 25, 2017 09:21 PM IST

سری نگر : جموں وکشمیر کی گرمائی دارالحکومت سری نگر کے مضافاتی علاقہ پانتھہ چوک میں واقع مشہور و معروف دہلی پبلک اسکول میں ہفتہ کی شام سے محصور لشکر طیبہ کے دونوں جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا ہے۔ ایک پولیس ترجمان نے اتوار کی شام کو یہاں بتایا ’اسکول میں چھپے بیٹھے دونوں جنگجوؤں کی لاشیں برآمد کی گئی ہیں۔ ان کی شناخت کا عمل جاری ہے‘۔

وزارت دفاع کے ترجمان کرنل راجیش کالیا نے یو این آئی کو بتایا کہ اگرچہ دونوں جنگجوؤں کی لاشیں برآمد کی گئی ہیں، تاہم سرچ آپریشن جاری رکھا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ محصور جنگجوؤں نے اتوار کی شام کو اُس وقت ایک بار پھر شدید فائرنگ کی جب سیکورٹی فورسز نے اسکول کی کثیرمنزلہ عمارت کی چوتھی منزل کی تلاشی لینی شروع کی ۔

سری نگر کے دہلی پبلک اسکول میں محصور دونوں جنگجو ہلاک، ایک افسر سمیت تین فوجی اہلکار زخمی

(Photo:AP)

سی آر پی ایف کے ایک ترجمان نے یو این آئی کو بتایا ’تین منزلوں کی تلاشی مکمل کرنے کے بعد جب سیکورٹی فورسز چوتھی منزل کے کمروں میں داخل ہونا شروع ہوئے تو وہاں موجود جنگجوؤں نے اچانک اپنی بندوقوں کے دھانے کھول دیے‘۔ انہوں نے بتایا ’طرفین کے مابین گولہ باری کے تازہ تبادلے میں دونوں جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا‘۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ اس مسلح تصادم کے دوران ایک افسر سمیت فوج کے تین اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ دو جنگجوؤں پر مشتمل گروپ نے ہفتہ کی شام قریب پانچ بجے پانتھہ چوک میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کے قافلے پر گھات حملہ انجام دینے کے بعد ڈی پی ایس کی کثیرمنزلہ عمارت میں پناہ لی۔ جنگجوؤں کی جانب سے سی آر پی ایف کے قافلے پر کئے گئے حملے میں ایک سب انسپکٹر ہلاک جبکہ دو دیگر زخمی ہوگئے تھے۔

پولیس سربراہ ایس پی وید نے کہا کہ اسکول میں موجود عملے بالخصوص واچ اینڈ وارڈ ڈیوٹی پر مامور افراد کو مسلح تصادم شروع ہونے سے قبل ہی بحفاظت باہر نکالا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ طرفین کے مابین گولہ باری کا تبادلہ ہفتہ اور اتوار کی نصب شب کو شروع ہوا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا ’ لشکر طیبہ کے دو جنگجوؤں نے پانتھہ چوک میں سی آر پی ایف کی گاڑی پر حملہ انجام دینے کے بعد ڈی پی ایس کی کثیرمنزلہ عمارت میں پناہ لی‘۔

انہوں نے بتایا کہ حملے کے فوراً بعد فوج، جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ اور سی آر پی ایف نے وسیع اراضی پر پھیلے اسکول کو چاروں اطراف سے گھیر لیا۔ پانتھہ چوک میں ڈی پی ایس قریب 400 کمروں پر مشتمل ہے۔ جبکہ یہ اس اسکول بادامی باغ فوجی چھاونی سے محض ایک کلو میٹر کی دوری پر واقع ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ طرفین کے مابین گولہ باری کا تبادلہ گذشتہ نصف شب کو شروع ہوا۔ انہوں نے بتایا کہ اسکول کی عمارت میں محصور جنگجوؤں کو ہلاک کرنے کے لئے مارٹر گولوں کا بھی استعمال کیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز