کشمیر میں فوجی جیپ پر نوجوان کو گھمانے کی ویڈیو پر رام مادھو نے کہا : محبت اور جنگ میں سب جائز

Apr 21, 2017 12:15 PM IST | Updated on: Apr 21, 2017 12:15 PM IST

سری نگر : بھارتیہ جنتا پارٹی کے قومی جنرل سکریٹری اور جموں و کشمیر میں بی جے پی اور پی ڈی پی اتحاد کے محرک رام مادھو نے جموں وکشمیر میں فوج کی گاڑی پر ایک نوجوان کو باندھ کر گھمائے جانے کی وائرل ویڈیو پر کہا ہے کہ محبت اور جنگ میں سب کچھ جائز ہے۔

رام مادھو نے سی این این نیوز 18 کے ساتھ خاص بات چیت میں کشمیر کے حالات پر وائرل ویڈیو پر اظہار خیال کیا۔ انہوں نے فوج کے جوان کے اس طریقے کو صحیح بتایا جس میں ایک میجر نے ایک نوجوان کو جیپ کے بونٹ پر باندھ رکھا ہے۔ حال ہی میں وائرل اس ویڈیو میں ایک نوجوان لڑکے کو جیپ سے باندھ کر فوج کے جتھے کے آگے لے جایا جا رہا ہے۔ فوج کا کہنا تھا کہ وہ ایک مظاہرین ہے ، جس کا سرینگر ضمنی انتخاب کے دن پتھربازوں سے بچنے کے لئے استعمال کیا گیا۔

کشمیر میں فوجی جیپ پر نوجوان کو گھمانے کی ویڈیو پر رام مادھو نے کہا : محبت اور جنگ میں سب جائز

رام مادھو نے کہا کہ یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ وادی میں سیکورٹی فورس کس طرح کی صورتحال کا سامنا کر رہے ہیں ۔ ان حالات میں اس جوان کے پاس دو راستے تھے۔ وہ بھیڑ کو دوسرے لوگوں اور سیکورٹی فورسز کے قتل کرنے کی اجازت دیتا یا اپنے ساتھیوں کے ساتھ اندھا دھند فائرنگ کرتا۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ تعریف کے قابل ہے کہ میجر نے دونوں میں سے کوئی بھی طریقہ نہیں اپنایا ، کیونکہ اس سے بڑی تعداد میں لوگوں کی جان چلی جاتی۔ مادھو کا کہنا تھاکہ اس سب کے لئے اگر کوئی ذمہ دار ہے تو وہ لوگ ہیں جو اس مشکل حالات میں مدد بھیجنے میں ناکام رہے ہیں۔ جنگ اور محبت میں سب کچھ جائز ہوتا ہے۔

کیا حکومت میجر کو بچانے کی کوشش کر رہی ہے، اس سوال کے جواب میں رام مادھو نے کہا کہ حکومت صرف امن برقرار رکھنا چاہتی ہے۔ ہم روز ایک لاش نہیں چاہتے جو حریت چاہتا ہے۔

کشمیر میں تشدد سے نمٹنے کے لئے بی جے پی اور پی ڈی پی کی حکومت کی ناکامی پر قومی جنرل سکریٹری نے کہا کہ حکومت لوگوں کے لئے بہت سے ترقیاتی منصوبوں لے کر آ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت کو اس سلسلے میں مزید فعال اور ہوشیار رہنا چاہئے۔ اس سلسلے میں بہتر ہونے کی ضرورت ہے۔ بی جے پی اور پی ڈی پی اتحاد کی کامیابی کے سوال پر رام مادھو نے کہا کہ کشمیر کے حالات کا اتحاد سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ یہ ملک اور قومی یکجہتی اور خودمختاری کے لئے ایک چیلنج ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز