ای وی ایم تنازع پر اکھلیش یادو نے کہا : اب جو بھی انتخابات ہو ں ، وہ بیلٹ پیپر سے ہوں

Mar 16, 2017 05:46 PM IST | Updated on: Mar 16, 2017 05:46 PM IST

لکھنو : سماج وادی پارٹی کو اسمبلی انتخابات میں ملی کراری شکست کی جائزہ میٹنگ میں سماج وادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو نے اس بات پر اتفاق ظاہر کیا کہ آئندہ ہونے والے سبھی انتخابات میں وی ایم کی جگہ بیلٹ پیپر کا استعمال ہونا چاہئے۔پارٹی دفتر پر منتخب اراکین اسمبلی کے ساتھ میٹنگ میں شکست پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ زیادہ تر ممبران اسمبلی نے شکست کے لئے ای وی ایم اور میڈیا کو ذمہ دار قرار دیا۔

میٹنگ میں اعظم خان نے ای وی ایم پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا جن ای وی ایم مشینوں سے پرچياں نکل رہی تھیں ، وہاں 2-4 ووٹ ملے ہیں۔ یہ ظاہر کرتا ہے کہ کچھ گڑبڑ ہے۔ اس کے بعد راجندر چودھری نے بیلیٹ پیپر سے انتخابات کرانے کا مطالبہ کیا ، جس کی سبھی ممبران اسمبلی نے حمایت کی۔

ای وی ایم تنازع پر اکھلیش یادو نے کہا : اب جو بھی انتخابات ہو ں ، وہ بیلٹ پیپر سے ہوں

میٹنگ کے بعد میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے ایس پی ترجمان راجندر چودھری نے کہا کہ اکھلیش نے کہا کہ اب پیچھے مڑ کر نہیں دیکھنا چاہئے۔ یہ بھی مطالبہ کیا گیا کہ اب آگے کے انتخابات بیلیٹ پیپر سے ہونے چاہئیں۔ چودھری نے کہا کہ لیجسلیچر پارٹی کا لیڈر منتخب کرنے کا اکھلیش یادو کو اختیار کیا گیا ہے۔

غور طلب ہے کہ بی ایس پی سپریمو مایاوتی نے سب سے پہلے اپنی پارٹی کی شکست کا ٹھیکرا وی ایم مشین میں مبینہ دھاندلی پر پھوڑا تھا۔ اس کے بعد سے سماجوادی پارٹی اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال بھی ای وی ایم میں چھیڑچھاڑ کے خدشہ ظاہر کرتے ہوئے بیلٹ پیپر سے انتخابات کرائے جانے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز