چدمبرم کا مرکز سے سوال ، امریکہ کی طرف سے جموں و کشمیر کو ہندوستان کے زیر انتظام علاقہ قرار دینے کی بات کیوں تسلیم کی گئی؟

Jun 28, 2017 05:31 PM IST | Updated on: Jun 28, 2017 05:31 PM IST

نئی دہلی: کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر داخلہ پی چدمبرم نے امریکہ کی طرف سے جموں و کشمیر کو ہندوستان کے زیر انتظام علاقہ بتائے جانے پر مودی حکومت کو کٹہرے میں کھڑا کرتے ہوئے کہا کہ یہ بات کس طرح قبول کی گئی۔ مسٹر پی چدمبرم نے آج ٹویٹ کیا کہ امریکہ کے سرکاری بیان میں جموں و کشمیر کو ' ہندوستان کے زیر انتظام خطہ بتایا گیا۔ ہندوستان نے اسے کس طرح تسلیم کیا؟۔

خیال رہے کہ امریکی انتظامیہ نے واشنگٹن میں وزیر اعظم نریندر مودی کی امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے ساتھ ملاقات سے ٹھیک پہلے حزب المجاہدین کے سربراہ سید صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار دیا تھا۔ اس سلسلے میں جاری نوٹیفکیشن میں امریکی انتظامیہ نے جموں و کشمیر کا ذکر ' ہندوستان کے زیر انتظام علاقے کے طور پر کیا تھا۔

چدمبرم کا مرکز سے سوال ، امریکہ کی طرف سے جموں و کشمیر کو ہندوستان کے زیر انتظام علاقہ قرار دینے کی بات کیوں تسلیم کی گئی؟

صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار دیا جانا کافی اہم خیال کیا جا رہا ہے۔ امریکہ کے اس اعلان کے بعد پاکستان بری طرح ناراض ہے اور صلاح الدین کی حمایت میں اتر آیا ہے۔ منگل کو پاکستان کی وزارت خارجہ نے صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار دیئے جانے کو مکمل طور غیر مناسب قرار دیا اور جموں و کشمیر کے عوام کے لیے آواز اٹھانے کی بات دوہرائی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز