معروف ماہر تعلیم اور سابق ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹرمحمد ہاشم قدوائی انتقال کر گئے

Jan 10, 2017 08:11 PM IST | Updated on: Jan 10, 2017 08:15 PM IST

نئی دہلی۔ معروف ماہر تعلیم اور سابق ممبر پارلیمنٹ ایم ہاشم قدوائی کا مختصر علالت کے بعد آج شام یہاں اپولو اسپتال میں انتقال ہو گیا۔ وہ 96 برس کے تھے۔ پسماندگان میں تین بیٹیاں اور دو بیٹے ہیں۔ مرحوم کی اہلیہ پہلے گزر چکی تھیں۔ تدفین علی گڑھ میں کل ظہر بعد عمل میں آئے گی۔ روزنامہ جدید خبر کے مدیر معصوم مرادآبادی نے اس افسوسناک خبر کے ساتھ بتایا کہ مرحوم کو علمی، تہذیبی اور سیاسی تاریخ کے انسائیکلو پیڈیا کی حیثیت حاصل تھی۔

ہاشم قدوائی کی پیدائش 2 مارچ 1921 میں ہوئی تھی۔ انہوں نے لکھنئو یونیورسیٹی اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی۔  اے ایم یو میں کوئی 35 برسوں تک پالیٹیکل سائنس پڑھاتے رہے۔ ان کے شاگردوں میں نائب صدر جمہوریہ محمد حامد انصاری بھی شامل ہیں۔ مرحوم ایک قوم دوست مسلم تھے اور ہندستان چھوڑو تحریک کے طلبہ گروپ میں شامل تھے۔ انہیں ایڈیٹر کے نام اپنے بصیرت شعار اور بروقت خطوط کے لئے بھی جانا جاتا تھا۔ پچھلے سال 27 ستمبر کو یہاں نائب صدر جمہوریہ حامد انصاری نے اپنے گھر پر مرحوم کی آپ بیتی پر مبنی کتاب ’’نیشنلسٹ مسلم ‘‘ کا اجرا کیا تھا۔ یہ کتاب 1947 سے قبل جنگ آزادی کی جدوجہد میں وطن پرستوں کے رول اور اس کے بعد کے حالات کا بھر پور احاطہ کرتی ہے، جس میں علی گڑھ اور کانگریس پارٹی کی تاریخ کا بھی احاطہ کیا گیا ہے۔

معروف ماہر تعلیم اور سابق ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹرمحمد ہاشم قدوائی انتقال کر گئے

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز