کشمیر سے متعلق امریکی نوٹیفکیشن میں ہندوستان کے زیر انتظام لفظ کا پہلے بھی ہوچکا ہے استعمال : مرکز

Jun 29, 2017 07:23 PM IST | Updated on: Jun 29, 2017 07:24 PM IST

نئی دہلی: حکومت نے امریکی انتظامیہ کے ایک نوٹیفکیشن میں جمویں و کشمیر کو ’ہندوستان کے زیر انتظام‘ بتائے جانے پر پیدا تنازع پر آج وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کا ذکر ہندوستان میں سرحد پار سے کی جارہی دہشت گردی پر جاری امریکی رپورٹوں میں پہلے بھی کئی مرتبہ ہوچکا ہے۔

وزیر اعظم مودی کے امریکہ دورہ کے دوران امریکی انتظامیہ نے پاکستان سے سرگرمیاں چلانے والے دہشت گرد تنظیم حزب المجاہدین کے سرغنہ سید صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار دیا تھا۔ اس سلسلہ میں جاری نوٹیفکیشن میں جموں و کشمیر کو ’ہندوستان کے زیر انتظام‘ قرار دیا گیا ہے۔ اس پر اپوزیشن جماعت کانگریس نے سخت اعتراض کیا ہے اور کہا ہے کہ وزیر اعظم کے امریکہ میں رہتے ہوئے اس طرح کا ذکر کیسے کیا گیا۔ وزیر اعظم کو اس پر اعتراض کرنا چاہئے تھا۔

کشمیر سے متعلق امریکی نوٹیفکیشن میں ہندوستان کے زیر انتظام لفظ کا پہلے بھی ہوچکا ہے استعمال : مرکز

وزارت خارجہ کے ترجمان نے اس معاملے میں وضاحت جاری کرتے ہوئے کہا کہ امریکی وزارت خارجہ کے نوٹیفکیشن میں جموں و کشمیر کے حوالہ ہندوستان کے زیر انتظام کے طو رپر کیا جانا ہمارے اس موقف کی تصدیق کرتا ہے کہ صلاح الدین ہندوستان میں سرحد پار سے دہشت گردی میں ملوث ہے۔امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سے دہشت گردی پر ہر سال جاری کی جانے والی رپورٹوں میں ہندوستان میں سرحد پارسے کی جانے والی دہشت گردی کے حوالے سے ’ہندوستان کے زیر انتظام‘ لفظ کا ذکر اس سے پہلے بھی کئی مرتبہ کیا جاچکا ہے۔ جس میں 2010-13 کی مدت بھی شامل ہے۔

ترجمان نے کہا کہ ہندوستان کا اعلانیہ موقف ہے کہ پورا جموں و کشمیر اس کا اٹوٹ حصہ ہے۔ امریکی کے ذریعہ صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار دئے جانے کا ہندوستان نے خیر مقدم کیا ہے۔ اس سلسلے میں کافی وقت سے امریکی انتظامیہ کے ساتھ تبادلہ خیال چل رہا تھا۔ وزیر اعظم کی امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے ساتھ میٹنگ کے بعد 26جون کو جاری کئے گئے مشترکہ بیان میں یہ بات مضبوطی سے کہی گئی ہے کہ دونوں ملک دہشت گرد کے خلاف کندھے سے کندھا ملا کر لڑیں گے۔دونوں ملکوں نے پاکستان سے یہ یقینی بنانے کے لئے کہا ہے کہ وہ اپنی زمین کا استعمال دیگر ملکوں کے خلاف دہشت گردانہ حملوں کے لئے نہ ہونے دے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز