فاروق عبد اللہ اور عمر عبداللہ کا ایل او سی پر گولہ باری میں انسانی جانوں کے زیاں پر صدمے کا اظہار

Oct 02, 2017 06:37 PM IST | Updated on: Oct 02, 2017 06:37 PM IST

سری نگر: نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور کارگزار صدر عمر عبداللہ نے ضلع پونچھ میں لائن آف کنٹرول پر گولہ باری کی وجہ سے قیمتی جانوں کے زیاں پر گہرے صدمے کا اظہار کرتے ہوئے مارے گئے افراد کے اہل خانہ اور پسماندگان کے ساتھ دلی تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے سرحد پر گزشتہ کئی ہفتوں سے جاری گولہ باری اور فائرنگ کے تبادلے کو بدقسمتی سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے لیڈران فائرنگ روکنے کے لئے کوئی بھی ٹھوس اقدام اُٹھانے کے موڑ میں نہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ فائرنگ لاحاصل عمل اور اس سے کسی کا فائدہ نہیں اُلٹا گولیوں کے تبادلے سے سرحدوں کے نزدیک گزر بسر کررہے عام شہریوں کی قیمتی جانوں کا زیاں ہوتا ہے اور یہ فائرنگ آبادی کے لئے مصیبت کا سامان بن کر آتی ہیں۔دونوں رہنماؤں نے کہا کہ آئے روز آر پار گولہ باری سے بے گناہ لوگ مارے جارہے ہیں، معصوم زخمی ہورہے ہیں اور مال مویشی بھی متاثر ہورہے ہیں۔

فاروق عبد اللہ اور عمر عبداللہ کا ایل او سی پر گولہ باری میں انسانی جانوں کے زیاں پر صدمے کا اظہار

مسٹر فاروق اور عمر عبداللہ نے لائن آف کنٹرول اور سرحد پر آر پار فائرنگ اور گولہ باری سے متاثرہ آبادیوں کی کسمپری اور ناگفتہ بہہ حالت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرکزی اورریاستی حکومتوں کے بلند بانگ دعوے زمینی سطح پر کہیں بھی دکھائی نہیں دے رہے ہیں ، نہ تو مرکزی سرکار گولہ باری روکنے کے لئے اقدامات اٹھا رہی ہے اور نہ ہی ریاستی سرکار سرحدی آبادی کو محفوظ مقامات پر منتقل کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ کئی ہفتوں سے حد متارکہ پر شدید فائرنگ اور گولہ باری ہورہی ہے لیکن حکومت نے ابھی تک آبادی کو محفوظ مقامات منتقل کرنے کی کوئی پرواہ نہیں اور نہ ہی اس آبادی کی حفاظت کیلئے کوئی خاطر خواہ اقدام اٹھایا گیا ہے۔ جس کی وجہ سے سرحدی آبادی کے سر پر موت کا سایہ ہمیشہ منڈلا رہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز