وسطی کشمیر کے بڈگام اور سوپور میں مسلح جھڑپیں، 5 جنگجو ہلاک

Nov 30, 2017 03:00 PM IST | Updated on: Nov 30, 2017 03:00 PM IST

سری نگر۔ وسطی کشمیر کے بڈگام اور شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے سوپور میں جاری جنگجو مخالف آپریشنوں کے دوران تاحال 5 جنگجو ہلاک جبکہ سیکورٹی فورسز کا ایک اہلکار زخمی ہوگیا ہے۔ دونوں مقامات پر جنگجوؤں کی حمایت میں شدید احتجاجی مظاہرے جاری ہیں۔ انتظامیہ نے سیکورٹی وجوہات اور افواہوں کو پھیلنے سے روکنے کے لئے وسطی کشمیر کے بڈگام، جنوبی کشمیر کے پلوامہ اور شمالی کشمیر کے بارہمولہ اضلاع میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات منقطع کردی ہیں۔

ریاستی پولیس نے وسطی کشمیر کے بڈگام کے پھٹلی پورہ پکھرپورہ میں جاری مسلح تصادم میں چار جنگجوؤں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔ پھٹلی پورہ اور پکھرپورہ مین چوک میں جنگجوؤں کی حمایت میں گھروں سے باہر آنے والے لوگوں کی سیکورٹی فورسز کے ساتھ شدید جھڑپیں ہوئی ہیں۔ ان جھڑپوں میں کم از کم 8 احتجاجیوں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ ان میں سے پانچ احتجاجی پیلٹ لگنے سے زخمی ہوئے ہیں۔ دوسری جانب بارہمولہ کے سگی پورہ سوپور میں جاری مسلح تصادم کے دوران تاحال ایک جنگجو کو ہلاک کیا جاچکا ہے۔ اس مسلح تصادم میں ایک سیکورٹی فورس اہلکار کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

وسطی کشمیر کے بڈگام اور سوپور میں مسلح جھڑپیں، 5 جنگجو ہلاک

ہندوستانی فوج: فائل فوٹو

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ پکھرپورہ کے پھٹلی پورہ میں جیش محمد کے جنگجوؤں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر فوج، جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ (ایس او جی) اور سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) نے مذکورہ علاقہ میں جمعرات کی علی الصبح تلاشی آپریشن شروع کیا۔ تاہم جب سیکورٹی فورسز علاقہ میں ایک مخصوص جگہ کی جانب پیش قدمی کررہے تھے تو ایک رہائشی مکان میں چھپے بیٹھے جنگجوؤں نے ان پر فائرنگ کی۔

انہوں نے بتایا ’سیکورٹی فورسز نے جوابی فائرنگ کی جس کے بعد طرفین کے مابین با ضابطہ طور پر گولہ باری کا تبادلہ شروع ہوا‘۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ فائرنگ کا تبادلہ شروع ہونے کے ساتھ ہی علاقہ میں موجود لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا۔ وزارت دفاع کے ترجمان کرنل راجیش کالیا نے یو این آئی کو بتایا کہ مسلح تصادم میں چار جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ علاقہ میں تلاشی آپریشن جاری ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ علاقہ میں مسلح تصادم شروع ہونے کے ساتھ ہی ضلع بڈگام اور پڑوسی ضلع پلوامہ میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات منقطع کی گئیں۔ انہوں نے بتایا کہ یہ خدمات سیکورٹی وجوہات اور کسی بھی طرح کی افواہوں کو پھیلنے سے روکنے کے لئے بند کی گئی ہیں۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق پھٹلی پورہ میں مسلح تصادم شروع ہونے کے ساتھ ہی اس کے ملحقہ علاقوں میں لوگ سڑکوں پر نکل آئے اور جنگجوؤں کے حق میں نعرے بازی شروع کردی۔ جب احتجاجیوں نے مسلح تصادم کے مقام کی جانب پیش قدمی کرنے کی کوششیں کیں تو سیکورٹی فورسز نے انہیں منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کے گولے داغے اور پیلٹ فائرنگ کی۔ سیکورٹی فورسز کی کاروائی میں 8 احتجاجیوں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ ان میں سے 5 پیلٹ جبکہ 3 دیگر گولیاں لگنے سے زخمی ہوئے ہیں۔ دوسری جانب سوپور کے سگی پورہ میں جاری مسلح تصادم میں ایک جنگجو ہلاک جبکہ سیکورٹی فورسز کا ایک اہلکار زخمی ہوگیا ہے۔ جنگجو کی ہلاکت کی تصدیق ریاستی پولیس سربراہ ڈاکٹر شیش پال وید نے کی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سگی پورہ میں جنگجوؤں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر فورسز نے مذکورہ علاقہ میں جمعرات کی صبح تلاشی آپریشن شروع کیا۔ انہوں نے بتایا ’اس دوران سیکورٹی فورسز کا جنگجوؤں سے آمنا سامنا ہوا‘۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ علاقہ میں جاری تصادم کے دوران تاحال ایک جنگجو ہلاک جبکہ سیکورٹی فورسز کا ایک اہلکار زخمی ہوگیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز