سماجوادی تنازعہ: اکھلیش خیمے نے الیکشن کمیشن کو دیا ڈیڑھ لاکھ صفحے کا 'ثبوت

Jan 08, 2017 09:37 AM IST | Updated on: Jan 08, 2017 09:37 AM IST

نئی دہلی۔ یوپی میں حکمراں جماعت سماج وادی پارٹی میں چل رہی جنگ میں بیٹا باپ پر بھاری پڑتا دکھائی دے رہا ہے۔ سماج وادی پارٹی کے انتخابی نشان سائیکل پر اکھلیش اینڈ کمپنی نے اپنا دعوی اور مضبوطی سے ظاہر کیا ہے۔ اکھلیش یادو گروپ نے آج پارٹی کے عوامی نمائندوں اور عہدیداروں کے دستخط والے حلف نامے کو الیکشن کمیشن کو سونپ دیا ہے۔ وزیر اعلی اکھلیش یادو کے حامی رام گوپال یادو دستاویزات کی سات کاپیاں حوالے کرنے کے لئے یہاں الیکشن کمیشن کے ہیڈ کوارٹر پہنچے۔ کمیشن نے اس گروہ سے یہ دستاویزات مانگے تھے۔

انہوں نے دعوی کیا کہ 1.5 لاکھ صفحات کے ان کاغذات میں 200 سے زیادہ ممبران اسمبلی، 68 قانون ساز کونسل کے ارکان میں سے 56 قانون ساز کونسل کے اراکین، 24 ممبران پارلیمنٹ میں سے 15 ممبران پارلیمنٹ اور 5000 نمائندوں میں سے اکھلیش حامی قریب 4600 نمائندوں کے دستخط ہیں۔

سماجوادی تنازعہ: اکھلیش خیمے نے الیکشن کمیشن کو دیا ڈیڑھ لاکھ صفحے کا 'ثبوت

گیٹی امیجیز

انہوں نے دستاویزات حوالے کرنے کے بعد کہا کہ 90 فیصدی عوامی نمائندے اور نمائندے اکھلیش یادو کے ساتھ ہیں۔ اس لیے یہ بالکل صاف ہے کہ ہم حقیقی ایس پی ہیں۔ ہمیں سائیکل نشان دیا جانا چاہئے اور اصلی ایس پی سمجھا جانا چاہئے۔ رام گوپال نے دعوی کیا کہ ایک سیٹ ملائم سنگھ کو ان کی دہلی رہائش گاہ پر بھیجا گیا، لیکن انہوں نے اعتراف کرنے سے انکار کر دیا۔ اب اسے ان کے لکھنؤ کے پتے پر بھیجا جائے گا۔

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز