لکھنو کے وی آئی پی اسپتال کے جی ایم یو میں خاتون کی اجتماعی آبروریزی ، ایک گرفتار ، دو فرار

Jun 01, 2017 09:41 PM IST | Updated on: Jun 01, 2017 09:42 PM IST

لکھنو : اترپردیش کی راجدھانی لکھنؤ کے کنگ جارج میڈیکل یونیورسٹی (کے جی ایم یو ) کے اسپتال میں ہردوئی کی رہنے والی ایک خاتون کے ساتھ اجتماعی آبروریزی کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ پولیس نے مقدمہ درج کر ایک ملزم کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ دو ملزم اب فرار ہیں۔

اطلاعات کے مطابق ہردوئی رہنے والی متاثرہ خاتون اپنے شوہر کا علاج کرانے یہاں آئی تھی۔ ڈاکٹروں نے اسے ڈالیسیز کرانے کا مشورہ دیا تھا ۔ متاثرہ بدھ کی رات کو کے جی ایم یو کے شتابدی اسپتال میں شوہر کا ڈالیسیز کرنے کے لئے گئی تھی۔ دیر شام کو ڈالیسیز ہونے کے بعد وہ شوہر اور اپنے لئے کھانا لانے کے لئے باہر نکلی۔ بتایا جاتا ہے کہ اس کے اوپر لفٹ مین کی کافی دنوں سے نگاہ تھی۔

لکھنو کے وی آئی پی اسپتال کے جی ایم یو میں خاتون کی اجتماعی آبروریزی ، ایک گرفتار ، دو فرار

علامتی تصویر

بدھ کی رات شیو کمار نام کے لفٹ مین نے اسے روک لیا اور اسپتال کی کینٹین سے اسے کھانا دلانے کا جھانسہ دے کر تیسری منزل پر لے گیا۔ وہاں پہلے سے دو لوگ موجود تھے۔ الزام ہے کہ تینوں اسے لفٹ مین کے کمرے میں لے کر گئے، جہاں اس کی اجتماعی آبروریزی کی گئی ۔ فی الحال پولیس فرار ملزمان کی تلاش کر رہی ہے اور معاملے کی جانچ کر رہی هے۔

قابل ذکر ہے کہ کنگ جارج میڈیکل کالج اتر پردیش کا وی آئی پی اسپتال مانا جاتا ہے۔ اس ہسپتال میں اترپردیش ہی نہیں دیگر ریاستوں سے بھی مریض علاج کروانے کیلئے آتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز