دلی کے تغلق آباد میں گیس رساؤ واقعہ: 300 طلبہ اور نو اساتذہ اسپتال میں داخل

May 06, 2017 09:17 AM IST | Updated on: May 06, 2017 04:26 PM IST

نئی دہلی۔ دہلی کے تغلق آباد علاقے میں ایک کنٹینر ڈپو سے آج گیس رساؤسے آنکھوں میں جلن کی شکایت کے بعد کم از کم 300 طلباء اور نو اساتذہ کواسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ فائر بریگیڈ حکام کے مطابق ایک نزدیکی اسکول نے صبح سات بجکر 35 منٹ پر فون کر کے گیس رساو کی اطلاع دی۔ دہلی پولیس کے حکام نے بتایا کہ یہ واقعہ غفلت کا نتیجہ ہے۔انہوں نے کہا کہ تقریبا 300 طلباء و طالبات اور نو اساتذہ کو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ اس سے پہلے دہلی کے نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے ٹویٹ کر کے کہا، "دہلی کے تغلق آباد میں ایک کنٹینر ڈپو سے گیس کا رساؤ ہوا ہے۔ ایک نزدیکی سرکاری اسکول کے بچوں کو اس کی وجہ سے مسائل کا سامنا کرنا پڑا۔ "مسٹر سسودیا نے بتایا کہ گیس رساؤ کی وجہ سے  طلبا نے آنکھوں میں جلن کی شکایت کی جس کے بعد انہیں اسپتال میں داخل کرایا گیا۔

انہوں نے کہا، "میں نے طلباء اور ڈاکٹروں سے بات چیت کی ہے۔ تمام بچے ٹھیک ہیں۔ ضلع مجسٹریٹ کو معاملے کی تفتیش کی ہدایت دی گئی ہے۔ " ذرائع نے یہاں بتایا کہ اس سلسلے میں معاملہ درج کر لیا گیا ہے۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال متاثرین کی عیادت کے لئے جا سکتے ہیں۔

دلی کے تغلق آباد میں گیس رساؤ واقعہ: 300 طلبہ اور نو اساتذہ اسپتال میں داخل

تصویر: نیوز ۱۸ انڈیا

نڈا کی متاثر طلبہ کو مدد فراہم کرنے کی ہدایت

 مرکزی حکومت نے تمام مرکزی اسپتالوں کو دارالحکومت کے تغلق آباد علاقے میں گیس رساؤ سے متاثر طلبا کو تمام  طرح کی مدد فراہم کرانے کی ہدایت دی ہے۔ مرکزی وزیر صحت جے پی نڈڈا نے آج ٹویٹ کیا کہ مرکزی جنرل اسپتالوں کو دہلی گیس لیک واقعہ کے تمام متاثرین کو مدد فراہم کرنے کے لئے تیار رہنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا، "میں بچوں اور ان کے اہل خانہ کے لئے دعا کرتا ہوں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز