کشمیر میں جوانوں سے بدسلوکی پر گوتم ہوئے گمبھیر، کہا : ایک تھپڑ کے بدلے 100 جہادیوں کو مار دو!۔

Apr 13, 2017 06:59 PM IST | Updated on: Apr 13, 2017 07:08 PM IST

نئی دہلی: اپنے بیباک اسٹائل کے لیے شہ سرخیوں میں رہنے والے کولکاتا نائٹ رائڈرس کے کپتان گوتم گمبھیر نے آزادی کے نعرے لگانے والے اور مرکزی ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کے جوانوں پر پتھروں سے حملہ کرنے والے کشمیر کے نوجوانوں پر کرارا حملہ بولتے ہوئے کہا کہ ایسے لوگوں کو ملک چھوڑ کر چلے جانا چاہیے۔ ہندوستانی کھلاڑی نے ملک مخالف سرگرمیوں میں ملوث لوگوں اور آزادی کا مطالبہ کرنے والے نوجوانوں کو بھی جم کر لتاڑا اور کہا کہ کسی ایک ہندستانی جوان کو پہنچنے والی چوٹ کے بدلے 100 جہادیوں کو موت کے گھاٹ اتارا جانا چاہیے۔

گمبھیر نے آپ ٹوئٹر پر لکھا کہ ہمارے ہر جوان کے چہرے پر پڑنے والے تھپڑ کے بدلے کم سے کم 100 جہادیوں کی جان لی جانی چاہیے۔جو بھی آزادی چاہتے ہیں وہ ملک چھوڑ کر جائیں گے۔ کشمیر ہمارا ہے۔ گوتم نے کہا کہ ہندستان مخالف لوگوں کو یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ ہمارے جھنڈے میں چار رنگ ہیں جس میں زعفران رنگ ہمارے غصے کی آگ، سفید جہادیوں کے کفن، سبز دہشت گردی کے خلاف نفرت کا رنگ ہے۔

کشمیر میں جوانوں سے بدسلوکی پر گوتم ہوئے گمبھیر، کہا : ایک تھپڑ کے بدلے 100 جہادیوں کو مار دو!۔

غور طلب ہے کہ کے کے آر کے کپتان کا یہ بیان ایسے وقت آیا ہے جب ایک دن پہلے ہی سی آر پی ایف جوان کا ایک ویڈیو وائرل ہوا جس مشتعل بھیڑ نے سری نگر میں پولنگ بوتھ سے واپس لوٹ رہے ایک سی آر پی ایف جوان پر حملہ کر دیا۔ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کشمیری نوجوان اس جوان کے چہرے پر تھپڑ مار رہے ہیں اور اس پر کک اور پنچ برسا رہے ہیں۔

علاوہ ازیں وریندر سہواگ نے بھی جوانوں کے ساتھ بدسلوکی سے متعلق وائرل ویڈیو پر غصہ ظاہر کیا ہے۔ سہواگ نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ٹویٹ کیا کہ یہ ناقابل قبول ہے۔ ہمارے سی آر پی ایف جوانوں کے ساتھ ایسا نہیں ہونا چاہئے، اس پر روک لگنی چاہئے، بدتمیزی کی حد ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز