گورکھپور میں 48 گھنٹے میں 30 اموات: اسپتال کی لاپرواہی کے یہ ہیں ثبوت

Aug 12, 2017 12:09 PM IST | Updated on: Aug 12, 2017 12:09 PM IST

گورکھپور۔ یوپی کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کے آبائی ضلع گورکھپور میں 48 گھنٹوں میں ہوئی اموات کے بعد اسپتال انتظامیہ کی لاپرواہی کی بات سامنے آ رہی ہے۔ سرکاری طور پر بتایا گیا کہ ان کی موت کا سبب جاپانی انسیفلائٹس اور ایکیوٹ انسیفلائٹس ہے۔ لیکن بابا راگھو داس میڈیکل کالج اسپتال میں آکسیجن کی کمی ہونے کی بات سے بھی افسر انکار نہیں کر پائے۔ نیوز 18 انڈیا کے پاس کئی ایسے دستاویزات ہیں جو کہ لاپرواہی کو اجاگر کرتے ہیں۔

وہیں، بچوں کی موت کے بعد لاپرواہی کا الزام لگاتی ہوئی اپوزیشن جماعتوں نے بھی حکومت اور انتظامیہ کو گھیرا ہے۔ کانگریس کے یوپی صدر راج ببر اور انچارج غلام نبی آزاد سمیت کئی لیڈر ہفتہ کو وہاں پہنچنے والے ہیں۔ وہیں سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو نے بھی 20-20 لاکھ روپے معاوضہ دئے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔

گورکھپور میں 48 گھنٹے میں 30 اموات: اسپتال کی لاپرواہی کے یہ ہیں ثبوت

اسپتال میں ہوئی ان اموات کی خبر سامنے آتے ہی صوبے کی انتظامیہ میں ہلچل مچ گئی۔ حکومت سے لے کر انتظامی افسران اس خبر پر صفائی دیتے نظر آئے۔ اصل میں گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں 10 اگست کی شام سے لیکوڈ آکسیجن کی سپلائی میں رکاوٹ پیدا ہو گئی تھی۔ اس سے پورے اسپتال میں موجود مریضوں کو دقت کا سامنا کرنا پڑا۔

نیوز 18 انڈیا کے پاس آکسیجن سپلائی کرنے والی کمپنی کا وہ خط ہے جو اس نے ایک اگست کو لکھا تھا۔ اس خط میں صاف طور پر بقائے کی ادائیگی کی بات لکھی گئی ہے۔ قریب 64 لاکھ روپے کے بقائے کی ادائیگی کے ضمن میں لکھے گئے اس خط میں کمپنی صاف طور پر کہہ رہی ہے کہ عدم ادائیگی پر وہ گیس کی سپلائی نہیں کر پائے گی۔

gorakhpur-letter-1

گیارہ اگست کو گورکھپور کی ہی ایک فرم سے دوپہر ڈیڑھ بجے 22 سلنڈر اسپتال لائے گئے۔ وہیں اسی فرم سے 36 اور سلنڈر شام ساڑھے چار بجے اسپتال پہنچے۔ گورکھپور کی اسی فرم کو سلنڈر میں آکسیجن بھرنے کے لئے 100 سلنڈر بھیجے گئے۔ وہیں 100 اور سلنڈر فیض آباد سے منگائے گئے۔

gorakhpur-letter

ان کاغذوں سے صاف ہے کہ اسپتال میں مسلسل آکسیجن کی کمی کی وجہ سے سلنڈر سے مریضوں کو راحت پہنچانے کی کوشش کی جا رہی تھی۔ لیکن لیکوڈ آکسیجن کی ادائیگی کے ضمن میں آئے خط کو سنجیدگی سے نہ لینا اور آکسیجن کی کمی ہونے کے بعد سلنڈر کا انتظام کرنا کہیں نہ کہیں اسپتال انتظامیہ کی لاپرواہی کو اجاگر کرتا ہے۔ سرکاری اعداد و شمار یہ بھی بتاتے ہیں کہ اسپتال میں گزشتہ 5 دنوں میں 60 مریضوں کی موت ہوئی ہے۔

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز