دیال سنگھ کالج کا نام وندے ماترم رکھنے پر گورننگ باڈی کے چیئرمین کو ملی جان سے مارنے کی دھمکی

دہلی یونیورسٹی کے دیال سنگھ کالج کا نام بدل کر وندے ماترم کرنے کا معاملہ اب طول پکڑتا جارہا ہے ۔

Nov 24, 2017 05:20 PM IST | Updated on: Nov 24, 2017 05:24 PM IST

نئی دہلی : دہلی یونیورسٹی کے دیال سنگھ کالج کا نام بدل کر وندے ماترم کرنے کا معاملہ اب طول پکڑتا جارہا ہے ۔ جہاں ایک طرف متعدد برادریوں نے اس کی شدید تنقید کی ہے ، وہیں اب گورننگ باڈی کے چیئرمین امیتابھ سنہا کا کہنا ہے کہ کالج کا نام بدلنے کی وجہ سے انہیں جان سے مارنے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں۔

امیتابھ سنہا نے دہلی پولیس میں اس سلسلہ میں ایک شکایت بھی کی ہے ۔ اپنی شکایت میںامیتابھ سنہا نے کہا ہے کہ جب سے کالج کا نام تبدیل ہوا ہے ، انہیں دھمکیاں موصول ہورہی ہیں ۔ ان سے کہا جارہا ہے کہ انہوں نے دیال سنگھ کا نام تبدیل کرکے وندے ماترم کیوں رکھا ۔ سنہا نے کچھ نامعلوم افراد کے خلاف رپورٹ بھی درج کرائی ہے۔

دیال سنگھ کالج کا نام وندے ماترم رکھنے پر گورننگ باڈی کے چیئرمین کو ملی جان سے مارنے کی دھمکی

دیال سنگھ کالج: فائل فوٹو

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اکالی دل سے وابستہ کچھ افراد اسے ہندو بنام سکھ کا معاملہ بنارہے ہیں ۔ ساتھ ہی ساتھ اکالی دل کا کہنا ہے کہ دیال سنگھ نے ایک ٹرسٹ بناکر اپنی زمین کالج کے نام کی تھی ، اب اسی زمین کے ٹکڑے کر کے ان کا نام ہٹاکر اسے وندے ماترم کردینا ٹھیک نہیں ہے۔

اکالی دل کا کہنا ہے کہ دیال سنگھ کا نام ہٹانا مناسب نہیں ہے جبکہ امیتابھ سنہا نے دلیل دی ہے کہ قانونی کارروائی کے تحت ہی کالج کا نام تبدیل کیا گیا ہے ۔ اس میں کسی کو شکایت نہیں ہونی چاہئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز