جی ایس ٹی کے نفاذ کے تاریخی موقع کے لئے سج گئی پارلیمنٹ ، کاروباریوں کی آج بھارت بند کی کال

Jun 30, 2017 12:01 AM IST | Updated on: Jun 30, 2017 09:41 AM IST

نئی دہلی: آزادی کے بعدسے سب سے بے اقتصادی اصلاحات ’ایک ملک ایک ٹیکس‘ کے نظریہ پر مبنی تاریخی اشیاء اور خدمات ٹیکس (جی ایس ٹی) بالآخر یکم جولائی 2017کو نافذ ہورہا ہے۔ پارلیمنٹ کے سنٹرل ہال میں آج نصف شب منعقد ہونے والی ایک تقریب میں صدر پرنب مکھرجی اور وزیر اعظم نریندر مودی گھنٹہ بجاکر ملک میں جی ایس ٹی نافذ ہونے کا اعلان کریں گے جب کہ سب سے بڑی اپوزیشن پارٹی کانگریس سمیت کئی پارٹیوں نے تقریب میں حصہ نہیں لینے کا اعلان کیا ہے۔ اس تاریخی تقریب کیلئے پارلیمنٹ کو پوری طرح سجادیا گیا ہے ۔ ادھر تاجروں نے آج  بھارت بند کی کال دی ہے ۔

مرکزی ایکسائز ڈیوٹی، سیلس ٹیکس، کسٹم ڈیوٹی، ویٹ جیسے کئی بالواسطہ ٹیکسوں کو ملا کر جی ایس ٹی بنایا گیا ہے اور اس کے نافذ ہونے پر تقریباً بیشتر بالواسطہ ٹیکس ختم ہوجائیں گے اور اشیاء کو ایک ریاست سے دوسری ریاست میں بلا روک ٹوک لے جایا جاسکے گا۔ حالانکہ حکومت کہہ رہی ہے کہ اس کے نافذ ہونے کے بعد مہنگائی نہیں بڑھے گی اور اس پر عمل کرنا سہل ہوگا لیکن کچھ اپوزیشن سیاسی جماعتوں کا کہنا ہے کہ اس کے لئے ابھی تیاریاں مکمل نہیں ہیں اور کاروباری بھی اس کے لئے تیار نہیں ہیں۔

جی ایس ٹی کے نفاذ کے تاریخی موقع کے لئے سج گئی پارلیمنٹ ، کاروباریوں کی آج بھارت بند کی کال

(Photo Credit: PTI)

جی ایس ٹی کے آغاز میں اس وقت کی اپوزیشن جی جے پی نے ہی سخت مخالفت کی تھی لیکن اب اس کا کہنا ہے کہ اس کے لئے ریاستوں کے درمیان اتفاق رائے ہوگیا ہے اور تقریباً تما م ریاستیں تیار ہیں۔ مودی حکومت کے ذریعہ جی ایس ٹی کے لئے کوشش کئے جانے پر کانگریس نے بھی اس کی مخالفت کی تھی۔ حالانکہ بالآخر جی ایس ٹی سے متعلق ائینی ترمیمی بل کو اتفاق رائے سے منظّور کیا گیا جس سے اس کے نافذ ہونے کا راستہ آسان ہوسکا۔

سنٹرل ایکسائز اور کسٹم ڈیوٹی بورڈ جی ایس ٹی کے سلسلے میں کاروباریوں میں بیداری پیدا کرنے اور انہیں اس کے لئے تربیت کرنے کے مقصد سے پورے ملک میں پروگراموں کا انعقاد کررہا ہے۔ حکومت کے تمام وزیر الگ الگ علاقوں میں منعقد ہورہے پروگراموں میں جی ایس ٹی کے فائدے بتارہے ہیں جب کہ کپڑا اور فرنیچر تاجروں کے ساتھ کئی کاروباری تنظیموں نے اس کی مخالفت میں کاروبار بند رکھا ہے۔ ایسوچیم نے جی ایس ٹی کے لئے کاروباریوں کے پوری طرح تیار نہیں ہونے کا حوالہ دیتے ہوئے حکومت سے سے نافذ کرنے کی تاریخ میں ایک ماہ کی توسیع کرنے کی اپیل کی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز