گجرات انتخابات : راہل گاندھی کو الیکشن کمیشن کا نوٹس ، انٹرویو چلانے پر نیوز چینلوں کے خلاف ایف آئی آر

الیکشن کمیشن نے گجرات میں دوسرے مرحلے کی ووٹنگ سے ایک روز قبل کانگریس کے نو منتخب صدر راہل گاندھی کا انٹرویو نشر کرنے والے مقامی ٹی وی چینلوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت دی ہے۔

Dec 13, 2017 09:44 PM IST | Updated on: Dec 14, 2017 12:06 AM IST

نئی دہلی : الیکشن کمیشن نے کانگریس کے نو منتخب صدر راہل گاندھی کو گجرات میں دوسرے مرحلے کی پولنگ سے پہلے ٹی وی چینل پر اپنا انٹرویو نشر ہونے کو بادی النظر میں انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی سمجھتے ہوئے انہیں نوٹس جاری کیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے مسٹر راہل گاندھی سے 18 دسمبر شام 5 بجے تک اس سلسلے میں وضاحت دینے کو کہا ہے۔ کمیشن نے کہا ہے کہ کچھ نیوز چینلوں نے ان کا انٹرویو گجرات میں دوسرے مرحلے کی پولنگ مکمل ہونے سے 48 گھنٹے کی مدت کے اندر نشر کیا ہے جبکہ ایسا کرنا عوامی نمائندگی قانون 1951 کی دفعات کے خلاف ہے۔ کمیشن نے کہا کہ اس مدت کے دوران انٹرویو دینا اور نشریات کرنا انتخابی ضابطہ اخلاق، عوامی نمائندگی قانون اور کمیشن کی ہدایات کی خلاف ورزی ہے۔

الیکشن کمیشن نے مسٹر گاندھی سے یہ بتانے کو کہا کہ انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے پر ان کے خلاف کارروائی کیوں نہ کی جائے۔اس سے پہلے کمیشن نے گجرات کے چیف الیکشن افسر کو دوسرے مرحلے کی پولنگ والے علاقوں میں مسٹر گاندھی کے انٹرویو نشر کرنے والے چینلوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت دی تھی۔

گجرات انتخابات : راہل گاندھی کو الیکشن کمیشن کا نوٹس ، انٹرویو چلانے پر نیوز چینلوں کے خلاف ایف آئی آر

کانگریس کے نامزد صدر راہل گاندھی: فائل فوٹو۔

الیکشن کمیشن نےانٹرویو نشر کرنے والے مقامی ٹی وی چینلوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت دی ہے۔ الیکشن کمیشن نے گجرات کے چیف الیکٹورل افسر کو یہ ہدایت دینے کے ساتھ ہی ٹیلی ویژن چینلوں سے اس طرح کی نشر یات فوری روکنے کو کہا ہے۔ کمیشن نے ریاستی چیف الیکشن افسر سے کہا ہے کہ وہ ایسے ٹیلی ویژن چینلوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرکے ضروری کارروائی کریں، جنہوں نے انٹرویو نشر کرکے عوامی نمائندگی قانون ( آر پی اے)، 1951 کی دفعہ 126 ( اے ) (بی ) کی خلاف ورزی کی۔ کمیشن کا کہنا ہے کہ اس طرح کا انٹرویو متعلقہ قانون کی دفعہ 126 (تین) کے تحت 'الیکشن معاملہ کے زمرے میں آتا ہے اور اس کا نشر کرنا دفعہ 126 ( اے ) ( بی ) کی خلاف ورزی ہے۔

کمیشن نے یہ کارروائی شکایتیں ملنے پر کی ہے۔کمیشن کے مطابق، اسے اس طرح کی شکایتیں اور رپورٹ ملی تھی کہ ریاست میں کچھ ٹیلی ویژن چینلوں نے ان علاقوں میں مسٹر گاندھی کا ایک انٹرویو نشر کیا ہے جہاں دوسرے مرحلے کے لئے کل پولنگ ہونے والی ہے۔ اس انٹرویو میں گجرات اسمبلی انتخابات سے متعلق باتیں کہی گئی ہیں۔

Loading...

کانگریس کا بی جے پی پر نیوز چینلوں اور صحافیوں کو دھمکی دینے کا الزام

ادھر کانگریس نے پی ایم او، بی جے پی اور گجرات کے وزیر اعلی کے دفتر پرپارٹی کے نومنتخب صدر راہل گاندھی کا انٹرویو نشر کرنے والے چینلوں کے صحافیوں کو دھمکی دینے کا الزام لگاتے ہوئے ا س میں ملوث افراد کے خلاف معاملہ درج کرکے کارروائی کرنے کامطالبہ کیا ہے۔ کانگریس میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سرجے والا نے آج یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ گجرات کے مقامی چینلوں کو مسٹر گاندھی کا انٹرویو نشر کرنے پر فون سے ڈرایا دھمکاجارہا ہے اور صحافیوں کو انجام بھگتنے کی دھمکی دی جارہی ہے۔ گجرات بی جے پی کے صدر اور وزیر اعلی دفتر سے فون کرکے چینلوں کے انتظامیہ کو جیل بھیجنے کی دھمکی دی جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مرکزیوزیر پیوش گوئل تو ایک قدم آگے نکل کر الیکشن کمیشن کو ہی حکم دینے لگے ہیں۔ مسٹر سرجے والا نے کمیشن سے ان تمام صورتحال کا نوٹس لیتے وئے ضروری کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ ترجمان نے کہا کہ صحافیوں کو دھمکی دینا برداشت نہیں کیا جائے گا اور کانگریس ان کے حقوق کی حفاظت کے لئے ڈھال بن کر کام کرے گی۔ مسٹر گاندھی کا انٹرویو گجرات اسمبلی الیکشن کے دوسرے مرحلے کی پولنگ سے ایک دن پہلے آج کئی چینلو ں پر نشر ہوا ہے۔ کانگریس کا الزام ہے کہ ان چینلوں پرنشر مسٹر گاندھی کے انٹرویو اور الیکشن میں اپنی یقینی شکست کو دیکھتے ہوئے بی جے پی اور ان کے رہنما بوکھلا گئے ہیں اس لئے صحافیوں کو دھمکی دی جارہی ہے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز